The news is by your side.

Advertisement

شفافیت کامطالبہ سیاست، الزام یا غنڈہ گردی نہیں، مائیک پومپیو

واشنگٹن : امریکی سیکریٹری خارجہ مائیک پومپیو نے کہا کہ نیشنل ہیلتھ کمیشن نے تین جنوری کو وائرس سیمپل ختم کرنے کے احکامات جاری کیے تھے۔

تفصیلات کے مطابق ریاست ہائے متحدہ امریکا کے سیکریٹری خارجہ مائیک پومپیو نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ چین چاہتا تو لاکھوں انسانوں کی زندگیاں بچائی جاسکتی تھیں۔

مائیک پومپیو نے کہا کہ دنیا کی رسائی اب بھی وائرس کی حقیقت تک ممکن نہیں ہوئی، 128 دن گزرنے کے بعد بھی چین معلومات چھپا رہا ہے۔

انہوں نے کا کہا کہ ڈاکٹر لی نے 128 روز قبل سارس وائرس جیسے مرض میں مبتلا مریض کی اطلاع اپنے ساتھیوں سے آن لائن شیئر کی تھی جس کے بعد ڈاکٹر لی کو غلط معلومات پھیلانے کے الزام میں حراست میں لے لیا گیا تھا۔

امریکی سیکریٹری خارجہ نے واضح کیا کہ امریکا حقیقی خطرے سے دوچار ہے، اسی لیے شفافیت کا مطالبہ سیاست، الزام یا غنڈہ گردی نہیں۔

روناوائرس: چین اور امریکا ایک بار پھر آمنے سامنے

خیال رہے کہ امریکا اور چین کے درمیان کروناوائرس سے متعلق لفظی گولہ باری جاری ہے۔

اس سے قبل چین نے الزام عائد کیا تھا کہ ووہان شہر میں کرونا وائرس امریکی فوجیوں کی وجہ سے پھیلا ہے بعد ازاں وائٹ ہاؤس انتظامیہ نے اس دعوے کو بے بنیاد قرار دیا تھا۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے چین کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے ہلاکت خیز کرونا وائرس کو ‘چینی وائرس’ کا نام دے دیا تھا۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں