ٹرمپ کا تجارتی جنگ کا اعلان، درآمد شدہ اسٹیل پر25فیصد ٹیکس عائد
The news is by your side.

Advertisement

ٹرمپ کا تجارتی جنگ کا اعلان، درآمد شدہ اسٹیل پر ٹیکسز عائد ، تجارتی پارٹنز کی جوابی کارروائی کی دھمکی

واشنگٹن : امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے تجارتی جنگ کا اعلان کرتے ہوئے درآمدی اسٹیل اور ایلومینیم پر زائد ٹیکسسز عائد کردئیے جبکہ یورپی یونین، آئی ایم ایف اور ورلڈ ٹریڈ آرگنائزیشن کی جانب سے اس اقدام کی شدید مخالفت کی گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق امریکی صدرٹرمپ نے سماجی رابطے کی وہب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے ٹوئٹ میں اسٹیل انڈسٹری کے تحفظ کیلئے درآمد شدہ اسٹیل پرپچیس فیصد اور ایلو مینیم پر دس فیصد سرچارج عائد کردیا اور کہا کہ تجارتی جنگیں اچھی چیز ہیں، امریکہ کیلئے تجارتی جنگ جیتنا آسان ہوگا۔

دوسری جانب یورپی یونین نے جوابا ساڑھے تین ارب ڈالر مالیت کی امریکی درآمدات پر پچیس فیصد ڈیوٹیز کے اطلاق پر غور شروع کردیا ہے۔

ورلڈ ٹریڈ آرگنائزیشن کا کہنا ہے کہ یہ اقدام عالمی تجارت کیلئے نقصان دہ ہے جبکہ کینیڈا،میکسیکو، چین اور برازیل نے جوابی کارروائی کی دھمکی دیدی ہے۔

عالمی مالیاتی ادارے آئی ایم ایف نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ ٹرمپ کی پالیسیاں نئی اقتصادی جنگ کا پیش خیمہ ثابت ہوسکتی ہیں، یہ اقدام دیگر ممالک کے ساتھ ساتھ امریکہ کیلئے بھی نقصان دہ ہوں گی۔

خیال رہے کہ امریکہ کو اسٹیل اور ایلومینیم کی سب سے زیادہ درآمدات جرمنی سے ہوتی ہیں، گزشتہ سال چودہ لاکھ ٹن اسٹیل اور ایلومینیم جرمنی سے خریدا تھا۔

امریکی فیصلے سے ڈو جونز انڈسٹرئل انڈیکس میں نمایاں کمی دیکھی گئی اور فیصلے کے اثرات ایشیائی منڈیوں میں بھی نظر آئے، جس کے باعث ٹوکیو، جاپان، ہانگ کانگ، سڈنی اور سیؤل میں بھی ان دھاتوں کے شیئرز کی قیمتوں میں کمی واقع ہوئی۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ صدر ٹرمپ کی جانب سے اسٹیل اور الومینیم پردرآمدی ڈیوٹی کے نفاذ سے امریکہ میں روزگار کے زیادہ مواقع پیدا نہیں کیے جا سکیں گے، اس کے نتیجے میں اشیا کی قیمتوں میں اضافہ ہوگا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں