The news is by your side.

روس پر یورپی پابندیوں سے ترکیہ فائدہ اٹھانے لگا

استنبول: یوکرین پر حملے کے بعد روس پر عائد یورپی پابندیوں سے ترکیہ فائدہ اٹھانے لگا ہے، اور اس کی روس سے تیل درآمد میں دو گنا اضافہ ہوا ہے۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق یورپی یونین نے یوکرین پر حملے کے بعد روس پر پابندیاں لگا رکھی ہیں، جس کے باعث یورپی کمپنیوں نے روس کے ساتھ کاروبار کو ختم کردیا ہے، جبکہ ترکیہ نے روس پر کوئی پابندیاں عائد نہیں کی تھی اور اپنی کمپنیوں کو روس کے ساتھ معاہدوں کی اجازت دی تھی۔

یورپی پابندیوں کے باعث موجودہ صورتحال سے ترکیہ بھرپور فائدہ اٹھارہا ہے اور ترکش کمپنیاں اس خلا کو پر کررہی ہیں، Refinitiv Eikon کی جانب سے جاری اعدادوشمار کے مطابق روس یوکرین جنگ کے بعد ترکیہ اور روس کے درمیان تجارت میں تیزی سے اضافہ ہوا ہے اور دونوں ممالک کے درمیان تیل کی درآمد دوگنا ہوگئی ہے۔

ریفینیٹیو کی رپورٹ کے مطابق ترکیہ روس سے یومیہ بنیادوں پر 2 لاکھ بیرل تیل درآمد کررہا ہے جو کہ 2021 میں اسی مدت کے دوران سے یومیہ 98 ہزار فی بیرل تھی۔

خیال رہے کہ روں ماہ کے آغاز میں روس کے صدر ولادیمیر پوتن اور ترک صدر طیب اردگان کے درمیان ملاقات ہوئی تھی، جس میں کاروباری تعاون کو فروغ دینے پر اتفاق کیا گیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں