The news is by your side.

’بابر اعظم اور رضوان سے چھٹکارا حاصل کرنے کا وقت آگیا‘

پاکستان کی انگلینڈ کے خلاف شاندار فتح اور کپتان بابر اعظم کی سنچری سے فارم میں واپسی پر شاہین آفریدی نے ناقدین کے لیے طنزیہ ٹوئٹ کیا ہے۔

گزشتہ روز نیشنل اسٹیڈیم کراچی میں کھیلے گئے پاکستان اور انگلینڈ کے مابین دوسرے ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل میں قومی ٹیم نے 10 وکٹوں سے شاندار فتح حاصل کرکے نہ صرف اپنی مسلسل شکستوں پر بریک لگا دیا بلکہ کپتان بابر اعظم نے ناقابل شکست سنچری کے ذریعے اپنی کھوئی ہوئی فارم بھی واپس حاصل کرلی جس پر سوشل میڈیا پر شائقین کرکٹ کے داد وتحسین پر مبنی تبصرے جاری ہیں۔

اسی شاندار فتح کی خوشی کے دوران اپنی انجری کے باعث اس وقت قومی ٹیم سے باہر بیٹھے پاکستان کے فاسٹ بولر شاہین شاہ آفریدی نے گزشتہ دنوں بابر اعظم کی فارم اور ٹیم کی شکستوں پر تنقید کرنے والوں کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے انہیں کرارا جواب دیتے ہوئے ان کے لیے طنزیہ ٹوئٹ کیا ہے۔

پاکستان کے شاندار فتح پر وزیراعظم شہباز شریف نے بھی نیو یارک سے قومی ٹیم کو مبارک باد دی اور کپتان بابر اعظم اور محمد رضوان کے لیے تعریفی ٹوئٹ کرتے ہوئے بھولے ہوئے لوگوں کو یاد دلا دیا کہ گزشتہ سال ٹی 20 ورلڈ کپ میں بھی پاکستان نے انڈیا کو 10 وکٹوں سے ہرایا تھا اور 152 رنز کا ہدف حاصل کیا تھا۔

کرکٹ میں کئی ریکارڈ بنانے والے قومی کپتان بابر اعظم کو گزشتہ دو ٹورنامنٹ میں خراب فارم کے باعث کافی تنقید کا نشانہ بھی بنا رہے تھے لیکن انہوں نے اپنی شاندار ناقابل شکست سنچری بناکر ان ناقدین کے منہ بند کرادیے ہیں، اس پر ایک صارف جبران امام نے ٹوئٹ کیا ہے جس میں انہوں نے تنقید کرنے والوں کو مشورہ دیا ہے کہ وہ ’’اپنے بادشاہ پر کبھی سوال نہ اٹھائیں۔‘‘

 

اس موقع پر بھی بعض صارفین طنز سے باز نہ آئے اور میدان میں مسلسل ناکام پاکستان کے مڈل آرڈر بالخصوص خوش دل خان کو تنقید کا نشانہ بنا ڈالا ہے۔

ایک صارف ذیشان حیدر نے ٹوئٹ کیا ہے کہ ’’بابر کی سینچری پر کپتان سے بھی زیادہ خوشی کسے ہوئی؟ پاکستان کے مڈل آرڈر کو اور کسے۔‘

 

عمر قریشی نامی صارف نے خوش دل شاہ سے منسوب کرکے ایک جملہ لکھا کہ ’شکر خدا کا میری بیٹنگ نہیں آئی۔‘

 

اسی طرح مزاحیہ ٹوئٹر اکاؤنٹ بروکن نیوز نے بابر اعظم سے منسوب کرکے لطیفہ چھوڑا کہ ’ایشیا کپ کی دعائیں اب قبول ہوئی ہیں۔‘

 

ان سب تہنیتی اور تنقیدی ٹوئٹ سے ہٹ کر قومی ٹیم کے زخمی فاسٹ بولر نے اس میچ سے قبل بابر اعظم اور محمد رضوان پر تنقید کرنے والوں کو آڑے ہاتھوں لیا ہے اور نام نہاد ناقدین کو آئینہ دکھانے کے لیے ایک طنزیہ ٹوئٹ کیا ہے جس میں انہوں نے لکھا ہے کہ ’’میرے خیال میں وقت آگیا ہے کہ کپتان بابر اعظم اور محمد رضوان سے چھٹکارا حاصل کیا جائے۔ اتنے خود غرض کھلاڑی۔ اگر صحیح سے کھیلتے تو میچ 15 اوورز میں ختم ہوجانا چاہیے تھا۔ یہ آخری اوور تک لے گئے۔‘

شاہین آفریدی نے اپنی ٹوئٹ کا اختتام اس جملے سے کیا ہے کہ ’’انہیں پاکستانی ٹیم پر فخر ہے۔‘‘

 

Comments

یہ بھی پڑھیں