ایران کے ساتھ کام کرنے کا الزام، امریکا نے تھائی کمپنی پر پابندی عائد کردی
The news is by your side.

Advertisement

ایران کے ساتھ کام کرنے کا الزام، امریکا نے تھائی کمپنی پر پابندی عائد کردی

واشنگٹن: ایرانی فضائی کمپنی کے ساتھ کام کرنے کے الزام میں امریکا نے تھائی ایوی ایشن کمپنی پر پابندی عائد کردی۔

تفصیلات کے مطابق ایران جوہری معاہدے سے دست برداری کے بعد جہاں امریکا ایران پر اقتصادی پابندیاں عائد کررہا ہے وہیں اس کے ساتھ کام کرنے والی کمپنی پر بھی پابندی عائد کردی۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکا نے جس فضائی کمپنی پر پابندی عائد کی ہے اس پر یہ الزام ہے کہ وہ ایرانی حکام اور ایرانی فضائی کمپنی مہان ایئر کے لیے کام کرتی تھی۔

امریکا کی جانب سے مہان ایئر پر بھی الزام عائد کیا گیا ہے کہ وہ شامی صدر کی حمایت میں لڑنے والے فوجی دستوں کو سفری سہولیات فراہم کرنے اور رسد کا کام انجام دیتی ہے۔

امریکی حکام کا کہنا ہے کہ مہان ایئر پر پہلے سے ہی پابندیاں عائد ہیں جبکہ لاکھوں شامی شہریوں کو بشارالاسد اور اس کے اتحادیوں کی جانب سے خطرہ ہے۔

ایران پر امریکی پابندیاں، عالمی طیارہ ساز کمپنی نے جہاز کی فروخت روک دی

خیال رہے کہ امریکا کی جانب سے ایران پر اقتصادی پابندیاں عائد کرنے کے بعد رواں سال جون میں عالمی طیارہ ساز کمپنی نے بھی ایران کو جہاز کی فروخت روک دی تھی۔

واضح رہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ایران سے جوہری معاہدہ ختم کرنے کے بعد اس ملک پر ماضی میں لگائی جانے والی اقتصادی پابندیاں دوبارہ بحال کردی ہیں۔

یاد رہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے رواں سال مئی میں ایران سے جوہری معاہدہ ختم کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا تھا کہ ایران پر سخت پابندیاں لگائیں گے، ایران سے جوہری تعاون کرنے والی ریاست پر بھی پابندیاں لگائیں گے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں