The news is by your side.

Advertisement

جو ملک کا دفاع کرنا چاہتا ہے، اسے ہتھیار دیں گے: یوکرینی صدر کا اعلان

کیف: یوکرینی صدر نے اعلان کیا ہے کہ جو شہری ملک کا دفاع کرنا چاہتا ہے، اسے ہتھیار دیں گے۔

تفصیلات کے مطابق یوکرین کے صدر ولودیمیر زیلینسکی نے اپنے آفیشل ٹویٹر اکاؤنٹ پر اعلان کیا ہے کہ جو شہری ملک کا دفاع کرنا چاہتا ہے اسے ہم ہتھیار دیں گے، ملک کے شہروں کے چوکوں اور چوراہوں میں ملک کا ساتھ دینے کے لیے تیار رہیں۔

یوکرینی صدر نے ملک کے دفاع کے لیے تیار شہریوں پر سے پابندیاں ہٹانے کا بھی اعلان کیا، انھوں نے کہا دفاع کرنے والوں پر سے پابندیاں ہٹائی جا رہی ہیں۔

ان کا کہنا تھا ہم نے روس سے سفارتی تعلقات منقطع کر لیے ہیں، تمام ممالک روسی جارحیت کے خلاف یوکرین کا ساتھ دیں، عالمی برادری یوکرین کے خلاف جنگ پر احتجاج کریں۔

ولودیمیر زیلینسکی نے کہا کہ روس نے جرمنی کی نازی حکومت کی طرز پر حملہ کیا ہے، روس برائی کے راستے پر چل پڑا ہے مگر یوکرین اپنا دفاع کر رہا ہے، یوکرین اپنی آزادی سے دست بردار نہیں ہوگا۔

روس کا یوکرین پر حملہ

واضح رہے کہ روسی افواج نے یوکرین پر باقاعدہ حملہ کر دیا ہے، روسی فوج دونباس ریجن میں داخل ہو چکی ہے، اور روس کی جانب سے یوکرین کی ایئر بیس اور ایئر ڈیفنس سسٹم تباہ کرنے کا دعویٰ بھی کیا گیا ہے۔

یوکرین سے ملحقہ 12 ائیر پورٹس بند کر دیے گئے ہیں، صدر پیوٹن نے یوکرین کے ساتھ جنگ میں عالمی برادری کو مداخلت نہ کرنے کا پیغام دے دیا ہے، انھوں نے کہا کسی نے مداخلت کی تو نتیجہ انتہائی سنگین ہوگا۔

یوکرین حملہ: نیٹو چیف کا روس سے بڑا مطالبہ

روسی حملے کے باعث یوکرین میں مارشل لا نافذ کر دیا گیا ہے، فضائی حدود بند کر دی گئی ہیں، دارالحکومت کیف سے لوگوں کی نقل مکانی جاری ہے، بینکوں اور اے ٹیم ایمز پر رش ہے، یوکرینی صدر نے روس کو جنگ سے روکنے کے لیے غیر ملکی رہنماؤں سے رابطے کیے جا رہے ہیں اور ساتھ دینے کی اپیل کی جا رہی ہے۔

یوکرین نے روس کے 5 طیارے بھی مار گرانے کا دعویٰ کیا ہے تاہم روس کی جانب سے تردید کی گئی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں