The news is by your side.

Advertisement

شدت پسندوں کی بہ نسبت افغانستان میں اتحادی افواج نے زیادہ شہری مارے: اقوام متحدہ

نیویارک: اقوام متحدہ نے انکشاف کیا ہے افغانستان میں شدت پسندوں کی بہ نسبت اتحادی افواج نے زیادہ عام شہری مارے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق اقوام متحدہ نے اپنی حالیہ رپورٹ میں انکشاف کیا ہے کہ رواں سال کے آغاز سے اب تک افغانستان میں اتحادی افواج نے شدت پسندوں سے زیادہ عام شہریوں کو موت کے گھاٹ اتارا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ افغانستان میں اقوام متحدہ کے مشن کی طرف سے جاری ہونے والی رپورٹ کو حیران کن قرار دیا گیا ہے جس میں سینکڑوں شہریوں کی ریاست کے ہاتھوں ہلاکتوں کا انکشاف ہوا ہے۔

رپورٹ کے مطابق رواں برس (2019) کی پہلی ششماہی میں نیٹو اور افغان فورسز نے اپنی کارروائیوں میں مجموعی طور پر 717 عام شہریوں کو ہلاک کیا، بالکل اسی عرصے کے دوران طالبان اور داعش کے ہاتھوں 531 شہری مارے گئے۔

ہلاک ہونے والوں میں افغان بچے اور عورتیں بھی شامل ہیں، اقوام متحدہ نے فریقین پر زور دیا ہے کہ وہ مذاکرات کے ذریعے معاملے کا حل نکالیں۔

ایران نے امریکا کو افغانستان میں بدامنی کا ذمہ دار قرار دے دیا

خیال رہے کہ افغانستان میں ریاستی فورسز اور امریکی فضائی کارروائیوں میں عام شہریوں کی ہلاکتوں میں اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے، گزشتہ برس 3804 عام شہری مارے گئے تھے، جن میں ہلاک ہونے والے بچوں کی تعداد 927 تھی۔

دوسری جانب افغانستان میں سالوں سے جاری خانہ جنگی اور شدت پسندی کی وجہ ایران نے امریکا کو قرار دیا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں