The news is by your side.

اردو بازار میں 15 سالہ حافظ قران پر فائرنگ کا واقعہ معمہ بن گیا

کراچی کے علاقے اردو بازار میں فائرنگ سے 16 سالہ حافظ قرآن نوجوان کے شدید زخمی ہونے کا معاملہ الجھ گیا، پولیس کا کہنا ہے کہ کچھ کہنا قبل از وقت ہوگا۔

تفصیلات کے مطابق اردوبازار میں فائرنگ سے16 سالہ نوجوان عبد الصمد کے زخمی ہونے کے معاملے پر پولیس ابہام کا شکار ہے، حکام کا کہنا ہے کہ واقعہ ڈکیتی میں مزاحمت ہے یا ذاتی رنجش کا پیش خیمہ اس حوالے سے تفتیش جاری ہے۔

پریڈی پولیس کے مطابق یہ کہنا قبل از وقت ہوگا کہ گولی جان بوجھ کر ماری گئی یا نامعلوم سمت سے آکر لگی، مزید تحقیقات کے لئے کرائم سین یونٹ کی ٹیم جائے وقوعہ پر پہنچ گئی۔

پولیس ذرائع کے مطابق عینی شاہدین کے بیانات میں تضاد پایا جارہا ہے فوری طور پر معاملہ کلیئر نہیں ہوسکا, واقعے میں ایک ہی فائر ہوا جس سے عبد الصمد کے سر اور گردن پر زخم آئے زخمی کی حالت تشویشناک ہے۔

ایک اور عینی شاہد کا کہنا ہے کہ ذاتی رنجش پر عبد الصمد کو معیز نام کے ایک لڑکے نے فائرنگ کرکے زخمی کیا ہے معیز اور صمد ایک ہی دوکان پر کام کرتے ہیں۔

اس کے علاوہ کچھ افراد کا کہنا ہے کہ ایک نامعلوم لمبے بال والے شخص نے فائرنگ کی، واقعاتی شواہد اور دیگر ذرائع سے معاملے کی تحقیقات جاری ہے۔

زخمی نوجوان عبد الصمد ریلوے کالونی کا رہائشی اور حافظ قران ہے ڈیڑھ ماہ سے لیتھ مشین کی دوکان پر کام کررہا ہے، واقعے کے وقت عبد الصمد اپنی دوکان سے کچھ فاصلے پر کچھ خریداری کرنے گیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں