میرا نام وزیرِ اعلیٰ کے لیے منتخب ہونا بریکنگ نیوز تھی، عثمان بزدار -
The news is by your side.

Advertisement

میرا نام وزیرِ اعلیٰ کے لیے منتخب ہونا بریکنگ نیوز تھی، عثمان بزدار

لاہور: پنجاب کے نامزد وزیرِ اعلیٰ عثمان بزدار نے کہا ہے کہ ان کا نام وزارتِ اعلیٰ کے لیے منتخب ہونا ایک بریکنگ نیوز تھی، سیاسی مخالفین پروپیگنڈا کر رہے ہیں۔

ان خیالات کا اظہار انھوں نے اے آر وائی نیوز کے پروگرام ’سوال یہ ہے‘ میں گفتگو کرتے ہوئے کیا، انھوں نے کہا ’میں خان صاحب کی ٹیم کا حصہ ہوں، ان شاء اللہ کل بہتر ہوگا۔‘

نامزد وزیرِ اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے اپنے خلاف ہونے والے پروپیگنڈے کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ 20 سال پہلے 2 قبیلے آپس میں لڑے تھے، سیاسی مخالفین نے ہمارا نام مقدمے میں درج کرا دیا تھا۔

عثمان بزدار نے کہا ’2 قبیلوں کا جھگڑا تھا، ہمارانام اس میں آ گیا، سیاسی مخالفین میرے خلاف پروپیگنڈا کر رہے ہیں، ہم نے 2 قبیلوں میں پھر صلح کرا دی تھی۔‘

انھوں نے کہا کہ حکومت میں آ کر تمام چیزوں کو ٹھیک کریں گے، ہمارا مقصد نا انصافی اور کرپشن کو ختم کرنا ہے، پس ماندہ علاقوں کو بہتر کرنا ہے۔

نامزد وزیرِ اعلیٰ کا کہنا تھا ’خان صاحب کے منشور پرعمل ہوگا، تھوڑا انتظار کریں، وزارتِ اعلیٰ خان صاحب کی امانت ہے جب چاہیں واپس لے سکتے ہیں۔‘


مزید پڑھیں:  عثمان بزدارکومخلص اورایماندار پایا، وہی وزیراعلیٰ پنجاب کے امیدوارہیں، عمران خان


واضح رہے کہ گزشتہ روز وزیرِ اعظم پاکستان عمران خان نے سردارعثمان بزدار کو وزیرِ اعلیٰ پنجاب کے عہدے کے لیے نامزد کیا، عثمان بزدار تونسہ کے نہایت پس ماندہ علاقے سے تعلق رکھتے ہیں۔

وزارتِ اعلیٰ کے لیے نامزد ہونے کے ساتھ ہی میڈیا میں ان کے خلاف قتل کا مقدمہ سامنے آیا، مقدمہ 1998 میں درج ہوا تھا، ایف آئی آر میں عثمان بزدار، والد اور بھائی سمیت دیگر کئی افراد نامزد کیے گئے تھے، وہ دیت دے کر چھوٹ گئے تھے، ڈیرہ غازی خان کی عدالت نے جنوری 2000 میں فیصلہ سنایا تھا۔

وزیراعظم عمران خان نے ٹویٹ کر کے ان کی حمایت میں کہا کہ عثمان بزدار ہی وزیرِ اعلیٰ پنجاب کے لیے ان کے امیدوار ہیں، دو ہفتے تک ان کے نام پر غور کیا اور انھیں ایمان دار پایا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں