The news is by your side.

Advertisement

نادار طلبا کو وظائف دینے کے لیے وسیلہ تعلیم پروگرام کا آغاز

اسلام آباد: وزیر اعظم کی معاون خصوصی برائے انسداد غربت ثانیہ نشتر کا کہنا ہے کہ کل وسیلہ تعلیم کے نئے پروگرام کا آغاز ہو چکا ہے، پروگرام کے تحت لڑکیوں کو 2 ہزار اور لڑکوں کو 15 سو روپے ملیں گے۔ یہ پیسے بچوں کو اسکول بھیجنے کے لیے استعمال ہوں گے۔

تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم عمران خان کی معاون خصوصی برائے انسداد غربت ثانیہ نشتر نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے بتایا کہ پسماندہ افراد کی ترقی کے لیے احساس پروگرام کے تحت منصوبے شروع کیے، احساس پروگرام میں ڈیجیٹل طریقہ کار اپنایا ہوا ہے۔

ثانیہ نشتر کا کہنا تھا کہ ہر پروگرام میں ہم نادرا سے رابطہ کرتے ہیں، پروگرام میں حقدار خاتون کا شناختی کارڈ دینے سے تمام تفصیل سامنے آجاتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ کل وسیلہ تعلیم کے نئے پروگرام کا آغاز ہو چکا ہے، پروگرام این جی او کے تحت چل رہا تھا جس میں کارکردگی کا مسئلہ تھا۔ پروگرام سے بدعنوانی اور کرپشن کے خاتمے کے لیے اقدامات کیے ہیں، اب اس بارے میں ہم این جی اوز پر انحصار نہیں کریں گے۔

ثانیہ نشتر کا کہنا تھا کہ وسیلہ تعلیم کو پورے ملک میں پھیلا رہے ہیں، گزشتہ چند سالوں میں وسیلہ تعلیم کی ٹیم نے بہت محنت کی ہے۔ اب یہ پروگرام مکمل طورپر ڈیجیٹل ہے، وسیلہ تعلیم پروگرام کے تحت وظیفے کی رقم کو بڑھایا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ تمام پروگرامز میں شفافیت کو یقینی بنا رہے ہیں، لڑکیوں کو پروگرام کے تحت 2 ہزار اور لڑکوں کو 15 سو روپے ملیں گے۔ یہ پیسے بچوں کو اسکول بھیجنے کے لیے استعمال ہوں گے۔

معاون خصوصی کا کہنا تھا کہ کل بلوچستان میں وزیر اعظم کو اس پروگرام پر بریفنگ دیں گے، بلوچستان کے تمام اضلاع اس پروگرام میں شامل ہیں، پروگرام سے 4 سے 12 سال کے بچے مستفید ہوں گے۔

انہوں نے مزید کہا کہ وسیلہ تعلیم کو احساس پروگرام کے دائرہ کار میں شامل کیا گیا ہے، احساس کفالت پروگرام کا دائرہ کار بھی بڑھایا جا رہا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں