The news is by your side.

Advertisement

وہ علامات جو ڈیلٹا ویریئنٹ کا سبب بنتی ہیں

کئی ممالک میں اب کرونا وائرس کے زیادہ تر انفیکشن ڈیلٹا ویریئنٹ کے ہیں، فرانس میں اسی فیصد سے زیادہ کووڈ ٹیسٹ ڈیلٹا ویریئنٹ کے مثبت تھے، ڈیلٹا اکثر کووڈ نائٹین کی جدید شکل کے مقابلے میں ہلکی علامات کے ساتھ ہوتا ہے، یہ کی علامات کیا ہیں؟۔

ڈیلٹا کی عام علامات
برطانیہ میں ’زو کووڈ اسٹڈی‘ کے لیے ایک ایپ بنائی گئی جہاں مریض اپنی علامات کی اطلاع دیتے تھے، اس تجربے سےمعلوم ہوا کہ زیادہ تر کیسز میں علامات کافی ہلکی دکھائی دیتی ہیں، سب سےعام علامات یہ ہیں

گلے کی سوزش
بخار
سر درد
ناک کا بہنا

الفا ویریئنٹ اور اصل کووڈ نائنٹین کے برعکس ڈیلٹا ویرینئٹ کے ساتھ کھانسی کم دکھائی دیتی ہے، یہی معاملہ ذائقہ اور بو کے ختم ہونے کا ہے جو برطانوی مریضوں نے پانچویں نمبر پر رپورٹ کیا تھا۔

الفا ویریئنٹ کی علامات
الفا میوٹیٹر کی سب سے عام علامات جن پر آپ کو توجہ دینی چاہیے، وہ یہ ہیں

سردی کے ساتھ 37.5 ڈگری سینٹی گریڈ سے اوپر بخار
خشک یا مرطوب کھانسی
ناک کا بہنا
سانس میں تنگی کی علامات جیسے کھانسی، جکڑن یا سینے میں درد اور بعض اوقات سانس لینے میں دشواری۔
درد (پٹھوں کا درد)
بو کے احساس کا ختم ہونا یا ذائقے کا فقدان۔
سر درد
نظام انہضام کی مشکلات(اسہال)
غیر معمولی تھکاوٹ (آستینیا)

دیگر غیر معمولی علامات میں آشوبِ چشم، خارش یا منہ کے زخم کی نشاندہی کی گئی ہے جو کرونا والے شخص میں ہوسکتے ہیں۔

اسی طرح اگر سانس میں تنگی شروع ہوجائے، تیز یا آہستہ سانس یا سوتے ہوئے سانس لینے میں تکلیف وغیرہ تو وہ بھی کرونا کی علامت میں شامل ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:کرونا مریض ہیپی ہائپوکسیا نامی بیماری سے ہوشیار رہیں، ماہرین کی تنبیہ

اس کے علاوہ کرونا وائرس کی بہت سی شکلیں بغیر علامات کے ہوتی ہیں، مطلب یہ ہے کہ وہ علامات ظاہر نہیں کرتیں، ایسے غیرعلامتی کیسز کی تعداد خاص طور پر بچوں میں زیادہ ہوسکتی ہے۔

کرونا وائرس علامات ظاہر ہونے سے پہلے متعدی ہوتا ہے، مطلب یہ کہ ایک متاثرہ شخص جو علامات محسوس نہیں کرتا وہ دوسروں کو متاثر کر سکتا ہے تاہم ایک صحت مند کیریئر(شخص) کم متعدی ہے کیونکہ وہ کھانسی نہیں کرتا (وائرس کھانسی اور چھینکنے کے دوران پھیلنے والی بوندوں کے ذریعے منتقل ہوتا ہے)۔

Comments

یہ بھی پڑھیں