The news is by your side.

کراچی : پلاٹ سے ملنے والی بچی کا قاتل کون؟ پولیس کو بڑی کامیابی مل گئی

کراچی : لانڈھی میں خالی پلاٹ سے ملنے والی زیادتی کے بعد قتل کی جانے والی سات سالہ بچی کا کیس جدید سائنسی بنیادوں کے تحت حل کرلیا گیا، پولیس ملزم کے گھر پہنچ گئی۔

کراچی کے علاقے لانڈھی میں گزشتہ دنوں کمسن بچی 7 سالہ منیبہ عمر کو اغواء کے بعد زیادتی اور قتل کرنے کے مقدمے میں پولیس کو بڑی کامیابی مل گئی۔

اس حوالے سے ذرائع کا کہنا ہے کہ اس سفاک ملزم کی شناخت ہوگئی ہے تاہم تاحال اسے گرفتار نہیں کیا جاسکا، ملزم کی شناخت اس کے بھائی اور بیٹے کے ڈی این اے سیمپلز سے ہوئی۔

ذرائع کے مطابق مجموعی طورپر100سے زائد افراد کے ڈی این اے نمونے جامعہ کراچی کی لیبارٹری میں بھیجے گئے تھے، جہاں ان نمونوں پر جدید سائنسی خطوط پر کام کیا گیا اور پولیس کو نتیجہ میچ کرکے دیا گیا۔

پولیس کے مطابق لیبارٹری رپورٹ ملنے کے بعد مرکزی ملزم کی شناخت ریاض کے نام سے ہوگئی ہے تاہم مرکزی ملزم کا ڈی این اے مفروری کے باعث حاصل نہیں کیا جاسکا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ ملزم کے بھائی اور بیٹے کا بھی ڈی این اے لے کر مقتول بچی کے نمونےسے میچ کیا گیا، پولیس کی جانب سے نتیجہ چھپایا گیا بلکہ تاحال ملزم بھی گرفتار نہیں کیاجاسکا۔

واضح رہے کہ گزشتہ ماہ کراچی کے علاقے لانڈھی میں کچرا کنڈی سے 7 سالہ بچی کمسن بچی کی لاش برآمد ہوئی تھی، جس کی شناخت منیبہ عمر کے نام سے ہوئی۔

بچی کے والد مقبول کا کہنا تھا کہ منیبہ بدھ کی دوپہر بھائی کے گھر سے لاپتا ہوئی وہ گھر سے بنا چپل پہنے نکلی تھی، دو روز تک پولیس ایف آئی آر درج کرنے کے بجائے ٹال مٹول کرتی رہی، بدھ کی شب تک لاش نہ ملنے پر یقین ہوگیا تھا کہ منیبہ کو اغوا کیا گیا ہے۔

مزید پڑھیں : کراچی، 7سالہ بچی کا زیادتی کے بعد قتل ، 4مشکوک افراد گرفتار

والد کا کہنا تھا کہ گزشتہ روز10بجے گمشدگی رپورٹ کیلئے تھانے پہنچا تو بھائی کی کال آئی ، بھائی نے اطلاع دی کہ بچی کی لاش مسلم آباد میں خالی پلاٹ میں پڑی ہے، لاش کو اسپتال منتقل کیا گیا۔

بعد ازاں مقتول بچی کے پوسٹ مارٹم میں زیادتی کی تصدیق ہوگئی ، پوسٹ مارٹم رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ مقتولہ بچی کےجسم پر تشدد کے نشانات بھی موجود ہیں۔

 

Comments

یہ بھی پڑھیں