The news is by your side.

Advertisement

کرونا وائرس: خواتین کی نسبت مردوں‌ کی زیادہ اموات کیوں؟ وجوہات سامنے آگئیں

کرونا وائرس نے دنیا کے 199 ممالک میں پنجے گاڑھ لیے اور اب تک مہلک وبا نے 31 ہزار 882 افراد کو موت کی ابدی نیند سلا دیا جبکہ 6 لاکھ 81 ہزار 706 سے زائد متاثر بھی ہوچکے ہیں۔

دنیا بھر میں رپورٹ ہونے والے کیسز کے بعد ماہرین کا کہنا ہے کہ کرونا وائرس خواتین کی نسبت مردوں کے لیے پچاس فیصد زیادہ خطرناک ہے اور یہی وجہ ہے کہ اُن کی اموات بھی زیادہ ہورہی ہیں۔

طبی اور تحقیقی ماہرین کا کہنا ہے کہ تمباکو نوشی، شراب نوشی اور عمومی طور پر صحت کا خراب رہنا مردوں کی موت کی بڑی وجوہات میں شامل ہے۔

ماہرین کے مطابق قدرتی طور پر خواتین میں ماں بننے کے باعث قوت مدافعت زیادہ ہوتی اور اُن کا سسٹم بھی مضبوط ہوتا ہے اسی وجہ سے کرونا وائرس سے متاثر ہونے والی عورتیں وبا کو شکست دے دیتی ہیں۔

تحقیقی ماہرین کا کہنا ہے کہ مرد تمباکو نوشی، شراب نوشی اور صحت کا خیال نہ رکھ کر اپنا مدافعتی نظام کمزور کرلیتے ہیں جس کی وجہ سے انہیں ہارٹ اٹیک ہوتا جبکہ اُن کی اموات بھی خواتین کے مقابلے میں جلدی ہوتی ہیں۔

طبی ماہرین کا کہنا ہے کہ پوری دنیا سے مردوں کی زیادہ ہلاکتوں کا اگر یہ ڈیٹا اکٹھا کر لیا جائے تو اس بات کا معلوم کیا جاسکتا ہے کہ اس جان لیوا وائرس سے لوگوں کو کیسے بچایا جا سکتا ہے۔

کرونا سے ہونے والی ہلاکتوں کی اگر بات کی جائے تو وبا کی وجہ سے سب سے زیادہ ہلاکتیں اٹلی میں ہوئیں جہاں مرنے والوں میں 70 فیصد مرد تھے جبکہ چین میں 60 فیصد مرد متاثر ہوئے۔

پاکستان میں بھی کرونا وائرس کے باعث اب تک سامنے آنے والی ہلاکتوں اور تصدیق شدہ متاثرہ مریضوں کی تعداد میں عورتوں کے مقابلے میں مردوں کی شرح زیادہ ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں