The news is by your side.

Advertisement

سردیاں: دل کے مریضوں کے لیے خطرہ؟

موسمِ سرما میں عام بیماریوں اور سرد ہواؤں کی وجہ سے پیدا ہونے والے مسائل کے ساتھ بعض دوسرے امراض میں بھی شدت آسکتی ہے۔ جیسے دمے کے مریضوں کو اس موسم میں شدید مشکلات پیش آتی ہیں، اسی طرح عارضۂ قلب کے مریضوں میں بھی سینے اور دل میں درد کی شکایت بڑھ سکتی ہے جس کی مختلف وجوہ ہیں۔

سردیوں میں خون کی نالیاں کسی حد تک سکڑ سکتی ہیں یا تنگ ہو جاتی ہیں جس کے نتیجے میں خون کی گردش متاثر ہوتی ہے۔ اس موسم میں خون کی نالیوں میں کھانوں کی چکنائی بھی گردش میں رکاوٹ ڈالتی ہے اور دل کو مناسب مقدار نہیں پہنچتی جس کی وجہ سے اس عضو کو زیادہ طاقت سے اپنا کام کرنا پڑتا ہے اور یہی وہ مسئلہ ہے جو کسی بھی مریض کو درد اور طبی پیچیدگی سے دوچار کر سکتا ہے۔

سردیوں میں عارضۂ قلب میں مبتلا افراد کو سب سے پہلے اپنی غذا کی طرف توجہ دینا چاہیے۔ آرام کرتے ہوئے یا سو کر اٹھنے پر سینے اور دل میں درد کا احساس اور اس تکلیف کو آدھے گھنٹے سے زائد برقرار رہنا، اسی طرح گھبراہٹ محسوس کرنے کے ساتھ ساتھ پیروں کا سُن ہو جانا، اچانک بہت زیادہ پسینا آنا اور بے چینی کے ساتھ نیند اور غنودگی محسوس کرنے کا مطلب یہ ہے کہ آپ موسم کے زیرِ اثر ہیں اور کھانے پینے سمیت دیگر حوالوں سے بہت زیادہ احتیاط کی ضرورت ہے۔

دل میں درد یا سینے کی تکلیف کو کبھی نظر انداز نہ کریں اور اسے محض موسم کا اثر سمجھ کر نہ ٹالیں۔ اپنے معالج سے اس کی ہدایات کے مطابق رابطہ کریں اور دواؤں کے ساتھ پرہیز کا خیال رکھیں۔ عارضۂ قلب میں مبتلا افراد کو سردیوں کے موسم میں بہت اپنی غذا اور خوراک پر توجہ دینے کے ساتھ تمام وہ تدابیر اختیار کرنا چاہییں جن سے دل کی کارکردگی متاثر نہ ہو۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں