ملک بھر میں آج یوم عاشور مذہبی عقیدت و احترام کے ساتھ منایا گیا -
The news is by your side.

Advertisement

ملک بھر میں آج یوم عاشور مذہبی عقیدت و احترام کے ساتھ منایا گیا

جلوسوں کی فضائی نگرانی، گزر گاہوں پر فورسز تعینات جبکہ بم ڈسپوزل اسکواڈ کا عملہ بھی الرٹ ہے

اسلام آباد / کراچی / لاہور : حضرت امام حسینؓ اور شہدائے کربلا کی یاد میں آج ملک بھر میں یوم عاشور مذہبی عقیدت و احترام کے ساتھ منایا گیا،جبکہ کسی بھی ناخوشگوار واقعے سے نمٹنے کے لئے سیکیورٹی کے انتہائی سخت انتظامات کئے گئے تھے۔

جلوسوں کی فضائی نگرانی کے ساتھ گزر گاہوں پر فورسز کی بھاری نفری تعینات ہے، بم ڈسپوزل اسکواڈ کے عملے کو بھی الرٹ کر دیا گیا ہے۔اس موقع پر مختلف شہروں میں چھوٹے بڑے جلوس برآمد ہوئے جبکہ جلوسوں کی گزرگاہوں پر سیکیورٹی کے انتہائی سخت انتظامات کیے گئے تھے، مختلف شہروں میں موبائل فون کی بندش کے ساتھ موٹرسائیکل کی ڈبل سواری پر بھی پابندی عائد تھی۔

کراچی میں یوم عاشور کا مرکزی جلوس مرکزی راستوں سے ہوتا ہوا حسینیہ ایرانیاں کھارادر پر ختم ہوا، جلوس کے راستوں میں پانی اور دودھ کی سبیلیں لگائی گئیں اور کسی بھی ناخوشگوار واقعے سے نمٹنے کے لیے رینجرز اور پولیس کی بھاری نفری تعینات تھی۔

یوم عاشور کے موقع پر لاہور سمیت پنجاب بھر میں چھوٹے بڑے جلوس برآمد ہوئے جو اپنے مقررہ راستوں سے ہوتے ہوئے کربلا گامے شاہ پہنچ کر اختتام پذیر ہوئے،جلوس کی سیکیورٹی کے لیے فول پروف انتظامات کیے گئے تھے۔

کراچی، لاہور سمیت ملک کے تمام شہروں میں جلوسوں کے روٹ پر لنک روڈز کو کنٹینرز اور قناتیں لگاکر بند کیا گیا ہے اور مسلسل فضائی نگرانی بھی جاری ہے، خواتین پولیس اہلکار کی بڑی تعداد بھی مرکزی جلوسوں کی سیکیورٹی کے فرائض انجام دے رہی ہیں۔

سیکیورٹی خدشات کے باعث کراچی سمیت کئی شہروں میں موبائل فون سروس صبح سے ہی بند ہوگئی جبکہ انٹرنیٹ وائی فائی سروس بھی متاثر ہے، سندھ اور پنجاب کے بڑے شہروں میں موٹر سائیکل کی ڈبل سواری پر پابندی عائد ہے۔

یوم عاشور کے موقع پر ملک بھر کی فضا سوگوار ہے،  نواسہ رسول حضرت امام حسین اور ان کے ساتھیوں نے کربلا کے میدان میں عظیم قربانی پیش کرکے اسلام کو ہمیشہ کے لیے سربلند کردیا.

حق و باطل کے اس معرکے کی یاد میں آج ملک کے تمام چھوٹے بڑے شہروں میں علم،شبیہہ ذوالجناح اور تعزیے کے جلوس برآمد کیے جا رہے ہیں جن کی سیکیورٹی کے لئے نہ صرف قانون نافذ کرنے والے اداروں کے ہزاروں اہلکار تعینات کئے گئے ہیں بلکہ سیکیورٹی کو یقینی بنانے کے لئے پولیس کے ساتھ رینجرز کو بھی اہم شاہراوں پر تعینات کیا گیا ہے۔

عزادار نوحہ خوانی اور ماتم کرکے اپنے غم کا اظہار کررہے ہیں، یوم عاشور پر سیدہ کےلعل کا پرسہ دینے کے لئے عزداران شاہراہوں پر ہیں، حسین ابن علی اور اہل بیت کی قربانیوں کو خراج عقیدت پیش کیا جارہا ہے۔

 : کراچی
کراچی میں یوم عاشور کامرکزی جلوس نشتر پارک سے برآمد ہوکر منزل کی جانب رواں دواں ہے، جلوس کے شرکاء نوحہ خوانی، سینہ کوبی اور زنجیر زنی کرتے ہوئے روایتی راستوں پر رواں دواں ہیں۔ جلوس کی گزرگاہوں پرسبیل لگائی گئیں ہیں اور لنگرتقسیم کیا جارہا ہے۔

 : لاہور
لاہور کا مرکزی جلوس نثارحویلی سے نکالا گیا جو مقرر کردہ راستوں پر گامزن ہے، عزاداران حسین نے جلوس کے راستے میں سینہ کوبی کی اور زنجرر زنی کی ، ضلعی انتظامیہ کی جانب سے سکیورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے ہیں، جلوس کے تمام راستوں کو مکمل طور پر سیل کرتے ہوئے ہر داخل ہونے والے ہر شخص کی میٹیل ڈیٹیکٹو کے ذریعے جامہ تلاشی لی جا رہی ہے۔

 : ملتان اور جھنگ
ملتان میں امام بارگاہ ہیرا حیدری اور جھنگ میں امام بارگاہ حسینیہ سےمرکزی جلوس نکلے، ملتان میں عزاداران کے تین بڑے ماتمی جلوس نکالے گئے ہیں جلوسوں کی نگرانی کیلئے پچاس سے زائد کیمرے نصب کئے گئے ہیں، سیکیورٹی اور کنڑول روم کی مانیٹرنگ علاقائی کمشنر اورڈپٹی کمشنر خود کر رہے ہیں۔

 : مظفر آباد
مظفر آباد میں یوم عاشور کا مرکزی جلوس امام بارگاہ پیر علم شاہ بخاری سے برآمد ہو کر اپنے روایتی راستوں پر رواں دواں ہے۔ جلوس کے راستے میں آنے والے تجارتی مراکز کو مکمل سیل کر دیا گیا ہے، جلوس کے لئے ریسکیو ادارے، بم ڈسپوزل اسکواڈ، محکمہ صحت، ٹریفک پولیس کا عملہ خصوصی طور پر اپنی فرائض سر انجام دے رہا ہے، کسی بھی ناخوشگوار واقعے کے پیش نظر سیکیورٹی ہائی الرٹ ہے۔

 : گوجرانوالہ  
یوم عاشورہ کے جلوس چوک گھنٹہ گھر پہنچ چکے ہیں ، جہاں وہ نماز ظہرین کی ادائیگی کے بعد زنجیر زنی کر رہے ہیں، جبکہ سیکیورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے ہیں اور آنے والے تمام افراد کی چیکنگ کی جاری ہے

علاوہ ازیں شہدائے کربلا کی یاد میں کوئٹہ میں علمدار روڈ سے جلوس برآمد ہوا، پشاور میں بھی یوم عاشور کا مرکزی جلوس اپنے مقررہ راستوں پر رواں دواں ہے، جہلم، ڈسکہ، سکھر، لاڑکانہ، گھوٹکی جامشورو سمیت ملک کے مختلف حصوں میں چھوٹے بڑے جلوس رواں دواں ہیں۔ گلگت بلتستان کے بھی مختلف شہروں میں جلوس نکالے جارہے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں