site
stats
اہم ترین

چونتیس افغان باشندوں کو ملک بدر کرنے کا حکم

لاہور ہائي کورٹ نے پاکستان ميں غير قانونی طور پر مقیم 34 افغان باشندوں کو ملک بدر کرنے کا حکم دے ديا، ملزمان غیر قانونی طریقے سے نہ صرف ملک میں داخل ہوئے بلکہ غیر قانونی کاموں میں‌ بھی ملوث تھے۔

لاہور ہائي کورٹ میں مقدمے کی سماعت جسٹس ارم سجاد گل نے ۔ ملزمان کی جانب سے سیشن کورٹ کی جانب سے دو سال قید کی سزا کے خلاف اپیل دائر کی گئی۔

ملزمان کے وکيل نے عدالت کو بتايا کہ وہ افغانستان کے حالات کی وجہ سے غیر قانونی طور پر پاکستان میں داخل ہوئے جہاں گجرات کے علاقے میں انھیں گرفتار کر لیا گیا اور عدالت نے دو سال قيد کي سزا بھی سنا دی۔

ملزمان کے مطابق وہ پاکستان میں قانونی تحفظ کے لیے ضروری کارروائی کر رہے تھے تاہم انھیں گرفتار کر کے سزا سنا دی گئی جسے کالعدم قرار دیا جائے۔

سرکاری وکيل نے عدالت کو بتايا کہ ملزم رحيم اللہ،نسيم خان،ولی گل اور سحر گل سميت پاکستان میں غیر قانونی طور پر مقیم 34 افغانيوں کو گجرات کے علاقہ سے گرفتار کيا گيا، یہ لوگ نہ صرف پاکستان میں بغیر دستاویزات کے داخل ہوئے بلکہ کئی غیر قانونی کاموں میں بھی ملوث ہیں جس پر انھیں مقامي عدالت نے 2015ء ميں دو سال قيد کي سزا سنائی ،ملزمان نے فیصلے کے خلاف اپیل دائر کی مگر ڈسٹرکٹ اينڈ سيشن جج نے درخواست مسترد کر دی تھی۔

عدالت نے وکلا کے دلائل مکمل ہونے کے بعد سیشن عدالت کی جانب سے دی جانے والی سزا برقرار رکھتے ہوئے اپیل مسترد کردی۔ عدالت نے حکم دیا کہ تمام ملزمان کو سزا مکمل ہونے کے بعد فوری طور پر ملک بدر کر دیا جائے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top