The news is by your side.

Advertisement

لاہور: طالبہ ہراسگی کا معاملہ نیا رخ اختیار کرگیا

لاہور کے ایم اے او کالج میں لیکچرار کی جانب سے مبینہ طور پر طالبہ کو ہراساں کرنے کا معاملہ نیا رخ اختیار کرگیا۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق لاہور کے ایم اے او کالج کی طالبہ نے لیکچرار پر ہراسگی کا الزام ثابت ہونے کے باوجود اپنی شکایت واپس لے لی۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ لیکچرار پر الزام لگانے والی طالبہ اپنی شکایت سے دستبردار ہوگئی، طالبہ نے تحریری طور پر محکمہ ہائر ایجوکیشن میں درخواست دے دی۔

طالبہ نے درخواست میں موقف اختیار کیا کہ مجھے لیکچرار نے ہراساں نہیں کیا، ہم ایک دوسرے سے موبائل پیغامات میں رابطے میں تھے، جو کوچھ ہوا وہ غلط فہمی کی بنیاد پر ہوا، معاملہ ختم کیا جائے۔

یہ پڑھیں:  کالج لیکچرار پر طالبہ کو میسجز کرنے کا الزام ثابت

طالبہ کا درخواست میں کہنا تھا کہ محکمہ ضروری سمجھے تو لیکچرار کا تبادلہ کردے۔

ذرائع کے مطابق محکمہ ہائر ایجوکیشن نے لیکچرار کا ایم اے او کالج سے تبادلہ کردیا، لیکچرار کو فوری محکمہ ہائر ایجوکیشن رپورٹ کرنے کی ہدایت کی گئی ہے۔

مزید پڑھیں: کالج کی طالبہ کو لیکچرار کے مبینہ نازیبا پیغامات

یاد رہے لاہور کے ایم اے او کالج کے شعبہ سائیکلوجی کے لیکچرار نے مبینہ طور پر ایم ایس کرنے والی طالبہ کو موبائل پر نازیبا پیغام بھیجا اور نمبر بڑھانے کی مشروط پیش کش بھی کی تھی۔

طالبہ کی شکایت پر پرنسپل نے نوٹس لے کر چار رکنی تحقیقاتی کمیٹی تشکیل دیتے ہوئے کہا تھا کہ طالبہ کو ہراساں کرنا غیر اخلاقی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں