The news is by your side.

Advertisement

پاکستان میں ہونے والی ہر پانچویں موت کی وجہ امراض قلب

کراچی: طبی ماہرین نے انکشاف کیا ہے کہ پاکستان میں ہر پانچویں موت امراض قلب کے باعث ہوتی ہے۔

امراض قلب کے عالمی دن کے موقع پر منعقدہ تقاریب کا انعقاد کیا گیا، جس میں ماہرین نے انکشاف کیا کہ پاکستان میں ہر مرنے والے ہر پانچویں شخص کی موت ہارٹ اٹیک یا دل کے اسٹروک کی وجہ سے ہوتی ہے۔

ماہرین نے امراض قلب سے بچاوٴ کیلیے طرز زندگی میں مثبت تبدیلیوں کی ضرورت پر زور دیا۔

پروفیسر محمد سعید قریشی کا کہناتھا کہ غذا اور ورزش پر توجہ دے کر ہم امراض قلب سے محفوظ رہ سکتے ہیں۔

ماہرین امراض کا کہنا تھا کہ مرغن غذائیں، ورزش نہ کرنا، وزن اور موٹاپے کو کنٹرول نہ کرنے سے ذیابیطس کے مریضوں کی تعداد بھی بڑھ رہی ہے، شوگر کے مریض بہت آسانی سے دل کے عارضے کا شکار ہوتا ہے۔

مزید پڑھیں: قومی ادارہ برائے امراض قلب کے لیے 10 ایوارڈز

یہ بھی پڑھیں: کتا آپ کو امراض قلب سے بچا سکتا ہے

عالمی ادارہ صحت کے مطابق پاکستان میں ہونے والی کل اموات میں سے ایک تہائی اموات شریانوں اور دل کی مختلف بیماریوں کی وجہ سے ہو رہی ہیں۔

طبی ماہرین کا کہنا ہے کہ ہلکی پھلکی سادہ غذا اور دن میں صرف آدھے گھنٹے کی ورزش کو معمول بنا کر دل کے بہت سے امراض سے بچا جا سکتا ہے۔

امراض قلب کی بنیادی وجوہات

دل کے عارضے کی ایک بڑی وجہ تمباکو نوشی، شوگر، بلند فشار خون، آرام پسندی، غیر متحرک طرز زندگی، موٹاپا، بسیار خوری پھلوں اور سبزیوں کا ناکافی استعمال اور باقاعدگی کے ساتھ ورزش نہ کرنا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں