The news is by your side.

Advertisement

عابد باکسرکی جان کے تحفظ کیلئے سسرنےعدالت سے رجوع کرلیا

لاہور : بدنام زمانہ انکاؤنٹر اسپیشلسٹ عابد باکسر کے سسر نے اپنے داماد کی جان کے تحفظ کیلئے عدالت سے رجوع کرلیا، جعلی پولیس مقابلے سے بچانے کیلئے لاہورہائیکورٹ میں درخواست دائر کردی۔

تفصیلات کے مطابق جعلی پولیس مقابلوں کے حوالے سے مشہورانکاؤنٹراسپیشلسٹ عابد باکسر کے سسر اپنے داماد کو  جعلی پولیس مقابلے سے بچانے کے لئے میدان میں نکل آئے۔

لاہور ہائیکورٹ نے عابد باکسر کی زندگی کے تحفظ کے لئے اس سے سسرکی جانب سے دائر کی گئی درخواست پر ڈائریکٹر ایف آئی اے اور آئی جی پنجاب سے جواب طلب کر لیاہے۔

قبل ازیں لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس انوار الحق نے درخواست کی سماعت کی، اس موقع پرعابد باکسر کے سسر جعفر رفیع نے عدالت میں مؤقف اختیار کیا کہ عابد باکسر کو دبئی پولیس نے انٹر پول کی مدد سے گرفتار کیا ہے۔

لاہور پولیس کی جانب سے عابد باکسر کے حوالے سے خطرہ ہے کہیں اس کو جعلی پولیس مقابلہ میں نہ مار دیا جائے، عدالت پولیس کو پابند کرے کہ اس طرح کا کوئی واقعہ پیش نہ آئے۔

درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ عابد باکسر کے خلاف درج مقدمات کا ریکارڈ عدالت میں طلب کیا جائے اور آئین کے آرٹیکل دس اے کے تحت عابد باکسر کو شفاف ٹرائل کا حق دیا جائے۔

عدالت نے ڈائریکٹر ایف آئی اے اور آئی جی پنجاب کو چھبیس فروری کے لئے نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کرلیا۔

واضح رہے کہ عابد باکسرکے حوالےسے ذرائع نے دعویٰ کیا ہے کہ عابد باکسر کو پولیس حراست میں مارے جانے کا امکان ہے، بدنام زمانہ انکاؤنٹر اسپیشلسٹ کو انٹر پول کے ذریعے دبئی سے گرفتار کرکے کراچی منتقل کیا گیا تھا، جس کے بعد اسے لاہور منتقل کردیا گیا۔

ذرائع کے مطابق عابد باکسرکو تاحال پنجاب پولیس کےحوالے نہیں کیا گیا، ذرائع کا کہنا ہے حکومت نے عابد باکسر کو منتقل کرنے کے لئے خفیہ مقام پر لے جانے کی ہدایت کر دی ہے۔


مزید پڑھیں: سابق پولیس انسپکٹر اور انکاؤنٹراسپیشلسٹ دبئی سے گرفتار


حکومت کو خدشہ ہے کہ عابد باکسر نے عدلیہ کے سامنے جعلی پولیس مقابلوں کا انکشاف کر دیا تو اہم صوبے کی انتہائی اہم شخصیات قانون کی گرفت میں آسکتی ہیں، ذرائع نے یہ خدشہ بھی ظاہر کیا ہے کہ عابد باکسر کو پولیس حراست میں بھی مارا جاسکتا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں