The news is by your side.

Advertisement

ملزمان جلد قانون کی گرفت میں ہوں گے: آئی جی پنجاب

لاہور: آئی جی پنجاب انعام غنی نے آج اہم نیوز بریفنگ میں کہا ہے گجر پورہ زیادتی واقعے میں ملوث ملزمان کو ابھی تک گرفتار نہیں کیا جا سکا ہے تاہم ملزمان جلد قانون کی گرفت میں ہوں گے۔

تفصیلات کے مطابق آئی جی پنجاب نے گجر پورہ میں خاتون کے ساتھ زیادتی کے واقعے میں میڈیا میں ملزمان کی گرفتاری کی خبروں کی تردید کر دی ہے، انعام غنی کا کہنا تھا کہ ملزمان کے پیچھے ہیں، انھیں جلد گرفتار کر لیا جائے گا۔

انھوں نے بتایا ملزم عابد علی کا ڈی این اے جائے وقوعہ پر شواہد سے میچ کر گیا ہے، جائے وقوعے سے لے کر ٹریس کرنے تک جدید طریقے سے تحقیقات کی گئی ہیں، ملزمان کو ابھی تک گرفتار نہیں کیا جا سکا، تاہم وہ جلد قانون کی گرفت میں ہوں گے۔

آئی جی پنجاب کا کہنا تھا معلومات زیادہ پبلک ہونے کی وجہ سے ملزمان کو فائدہ پہنچا، ملزمان کی گرفتاری کے لیے پہلے لاہور اور پھر شیخوپورہ میں چھاپا مارا گیا لیکن وہ ہاتھ نہ آ سکے، بہاولنگر سے ملزم عابد علی کا ریکارڈ حاصل کیا گیا۔

ملزمان کی اطلاع دینے والوں کو 25،25 لاکھ انعام دینے کا اعلان

انھوں نے کہا واقعے کی سائنٹفک انداز سے تحقیقات کی جا رہی ہیں، ملزم عابد علی کی شناخت ہوئی ہے جو فورٹ عباس کا رہائشی ہے، گزشتہ رات تمام شواہد ملزم عابد علی کی طرف جا رہے تھے، ہمارے پاس شناختی کارڈ کی تفصیل نہیں تھی جو رات حاصل کی گئی۔

آئی جی نے بتایا ملزم کے نام پر 4 موبائل سمز ہیں، ملزم ایک سم اور بھی استعمال کرتا تھا جو اس کے نام پر نہیں تھی، ہم موبائل سمز سے ملزم کے ساتھی تک بھی پہنچنے میں کامیاب ہو گئے ہیں، ملزم کو آج گرفتار کرنے جا رہے تھے لیکن پتا چلا وہ لاہور میں نہیں رہتا، ملزمان شیخوپورہ کے علاقے ستار شاہ میں رہائش پذیر تھے، ملزم کی گرفتاری کے لیے شیخوپورہ میں چھاپا مارا لیکن وہ فرار ہو گیا۔

آئی جی نے کہا گرفتاری کے لیے سول ڈریس میں چھاپا مارا لیکن وہ اور اس کی اہلیہ فرار ہو گئے، ملزم کے ساتھی کی گرفتاری کے لیے بھی چھاپا مارا گیا لیکن کامیاب نہیں ہوئے، ملزم عابد علی کا ریکارڈ حاصل کر لیا گیا ہے، اس کے گھر سے ایک خاتون کو بھی حراست میں لیا گیا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں