پشاور سے افغان صوبے کنڑ کے ڈپٹی گونر اغواء afghan deputy governor
The news is by your side.

Advertisement

افغان صوبے کنڑ کے ڈپٹی گورنر پشاور سے لاپتا

اسلام آباد : افغانستان کے صوبے کنڑ کے ڈپٹی گورنر غلام نبی پشاور سے لاپتا ہوگئے، سیکیورٹی اداروں نے ان کی تلاش شروع کردی۔

تفصیلات کے مطابق افغانستان کے صوبے کنڑ کے ڈپٹی گورنر غلام نبی کو پشاور سے اغوا کرلیا گیا ہے اور تاحال ان کا کچھ پتا نہیں چل سکا ہے جب کہ سیکیورٹی اداروں نے مغوی ڈپٹی گورنر کی تلاش کا آغاز کردیا ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ افغان سفارت خانے نے اسلام آباد میں دفتر خارجہ سے رابطہ کرتے ہوئے بتایا کہ کنڑ کے ڈپٹی گورنر آج کل پشاور میں مقیم تھے جن سے اب رابطہ نہیں ہو پا رہا جس پر افغان حکومت کو شدید تشویش ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ متعلقہ حکام کو افغان ڈپٹی گورنرکی گمشدگی کا بتا دیا گیا ہے جب کہ سیکیورٹی اداروں کوافغان ڈپٹی گورنر غلام نبی کا جلد از جلد پتا لگانےکی ہدایت بھی کردی گئی ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ سیکیورٹی ادارے اپنا کام پوری تندہی سے ادا کر رہے لیں اور جلد افغان ڈپٹی گورنر کے اغواکاروں تک پہنچ کر انہیں بازیاب کروالیں گے۔

سی سی پی او پولیس نے بتایا کہ افغان ڈپٹی گورنر قاضی محمد نبی کو ڈبگری گارڈن کے علاقے سے اغوا کیا گیا ہے جو گردے کے مرض میں مبتلا ہیں اور علاج کے غرض سے تین پہلے پشاور پہنچے تھے۔

انہوں نے مزید بتایا کہ افغان صوبے کنڑ کے ڈپٹی گورنر محمد نبی کے اغوا کا مقدمہ درج تھانہ شرقی میں درج کیا گیا ہے اور مغوی ڈپٹی گورنر کا سُراغ لگانے کے لیے انویسٹی گیشن ٹیم تشکیل دے دی گئی جو جلد ہی مثبت نتائج دے گی۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں