The news is by your side.

Advertisement

پلاسٹک بیگز پر پابندی غیر موثر : حکومت اب کیا کرنے جارہی ہے؟

کراچی : ماحولیاتی آلودگی پیش نظر پلاسٹک کی تھیلیوں پر کئی بار لگائی جانے والی پابندی کے باوجود ملک بھر میں اس کا استعمال مکمل طور پر جاری ہے لیکن اس بار حکومت نے اس مسئلے کو حل کرنے کا فیصلہ کرلیا۔

پاکستان دنیا کے ان128 ممالک کی فہرست میں شامل ہے جہاں پلاسٹک سے بنے شاپنگ بیگز کے استعمال پر پابندی عائد ہے لیکن قانون پر عمل درآمد کرانے کیلئے حکومتی مشینری ناکام نظر آتی ہے۔

حکومتی اور عدالتی احکامات کو نظر انداز کرتے ہوئے نہ صرف چھوٹے دکاندار بلکہ بڑی بڑی مارکیٹوں اور ڈیپارٹمنٹل اسٹوروں میں پلاسٹک بیگز کھلے عام زیر استعمال ہیں۔

تقریباً دو سال قبل سال2019کے ماہ اگست میں حکومت کی جانب سے اس قانون کا اطلاق کیا گیا تھا جس کے تحت پولیتھین سے بنے پلاسٹک کے تھیلے استعمال کرنے پر پابندی عائد کردی گئی تھی۔

اس حوالے سے اے آر وائی نیوز کے پروگرام باخبر سویرا میں ڈپٹی کمشنر اسلام آباد حمزہ شفقات نے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ ملک میں کورونا وبا کے بعد معاشی صورتحال اور دیگر مسائل نے جنم لیا جس کی وجہ سے یہ معاملہ پیچھے چلا گیا تھا۔

ڈپٹی کمشنر کا کہنا تھا کہ اب دوبارہ اس مسئلہ کی جانب ہماری مکمل توجہ ہے اور گزشتہ ماہ تمام متعلقہ محکموں اور تاجر برادری کے ساتھ میٹنگ کی ہے اور اس مہم کو دوبارہ شروع کیا جائے گا تاکہ اس مسئلے کا حل نکالا جائے۔

حمزہ شفقات نے اس بات پر زور دیا کہ اس حوالے سے عوام کے ذہنوں میں شعور اجاگر کرنا ہوگا کہ وہ پلاسٹک کی تھیلیوں کے نقصانات کو سمجھ سکیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں