The news is by your side.

Advertisement

فوجی چیک پوسٹ حملہ: علی وزیر کو پشاور سینٹرل جیل منتقل کرنے کا حکم

بنوں : انسداد دہشت گردی کی عدالت نے میرانشاہ میں خرکمر چیک پوسٹ پر حملےکے الزام میں گرفتار رکن قومی اسمبلی علی وزیر کے مزید جسمانی ریمانڈ کی استدعا مسترد کرتے ہوئے انھیں جیل منتقل کرنے کا حکم دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق میرانشاہ میں خرکمر چیک پوسٹ پر حملےکے الزام میں گرفتار رکن قومی اسمبلی علی وزیرکو بنوں کی انسداددہشت گردی عدالت میں پیش کیا گیا۔

سی ٹی ڈی کی جانب سے علی وزیر کے مزید ریمانڈ کی استدعا کی گئی، عدالت نے سی ٹی ڈی کی ملزم کے مزیدجسمانی ریمانڈ کی استدعامسترد کرتے ہوئے ملزم کو جیل منتقل کرنے کا حکم دیا۔

انسداد دہشت گردی کی عدالت کے حکم پرعلی وزیر کوسینٹرل جیل پشاورمنتقل کردیا گیا ہے۔

یاد رہے شمالی وزیرستان میران شاہ کے علاقے بویا میں واقع خارکمر چیک پوسٹ پر پی ٹی ایم کے رہنماؤں اور اراکین قومی اسمبلی علی وزیر اور محسن داوڑ کی سربراہی میں شرپسند عناصر نے دھاوا بولا تھا۔

چوکی پر حملہ آور گروہ کی فائرنگ کے سبب 5فوجی اہلکارزخمی ہوئے جبکہ فوج نے جوابی کارروائی کی جس کے نتیجے میں 3 افراد موقع پر ہی دم توڑ گئے تھے ، اہلکاروں نے علی وزیر سمیت 8 اراکین کوحراست میں لے لیا تھا، جس کے بعد قانونی کارروائی کا آغاز کیا گیا۔

رکن قومی اسمبلی علی وزیر کو  بنوں کی انسداد دہشت گردی کی عدالت میں پیش کیا گیا، جہاں عدالت نے انہیں 8 روزہ ریمانڈ پر کاؤنٹر ٹیررازم ڈیپارٹمنٹ کے حوالے کردیا تھا۔

مزید پڑھیں : چیک پوسٹ پر حملے کا مقدمہ درج، داوڑ اور علی وزیر سمیت 9 نامزد، دہشت گردی کی 10 دفعات شامل

واقعے کا مقدمہ درج کرکے ایف آئی آر میں رکن قومی اسمبلی محسن داوڑ، علی وزیر سمیت 9 افراد کو نامزد کیا گیا جبکہ سرکاری مدعیت میں درج ہونے والے مقدمے میں 302، 324 سمیت دہشت گردی کی 10 دفعات شامل کی گئیں تھیں۔

بعد ازاں ڈی سی شمالی وزیرستان نے رپورٹ کے پی حکومت کو ارسال کی تھی، جس میں خرکمر واقعے کا ذمہ دار محسن داوڑ اور علی وزیر کو قرار دیا گیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں