The news is by your side.

Advertisement

سرجیکل اسٹرائیک کا ثبوت مانگنے پر اروند کیجریوال پر سیاہی پھینک دی گئی

نئی دہلی: بھارتی دارالحکومت نئی دہلی کے وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال کا پاکستان پر ہندوستانی سرجیکل اسٹرائیکس کا ثبوت مانگنا ہندو انتہا پسندوں کو ایک آنکھ نہ بھایا اور ان پر اس وقت سیاہی پھینک دی گئی جب وہ اپنی پارٹی کے ایک رہنما کے گھر پر موجود تھے۔

بھارتی میڈیا کے مطابق وزیر اعلیٰ کیجریوال پارٹی کے ایک مقامی رہنما شنکر سیوا داس کے گھر سے نکل رہے تھے کہ ایک شخص نے ان کے چہرے پر سیاہی پھینک دی۔ اس نے کیجریوال پر ملک مخالف ہونے کا الزام بھی عائد کیا۔

سیاہی پھینکنے والے شخص کی شناخت دنیش کے نام سے ہوئی جسے پولیس نے گرفتار کرلیا۔

واقعہ کے بعد کیجریوال نے اپنی سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر ٹوئٹ کرتے ہوئے کہا، ’خدا اس شخص کا بھلا کرے جس نے مجھ پر سیاہی پھینکی۔ میری دعائیں اس کے ساتھ ہیں‘۔

واضح رہے کہ اروند کیجریوال نے دو روز قبل اپنے فیس بک صفحہ پر ایک ویڈیو اپ لوڈ کی تھی جس میں وہ بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی سے اپیل کر رہے تھے کہ پاکستان میں ہونے والے سرجیکل اسٹرائیکس کا ثبوت دنیا کے سامنے پیش کیا جائے تاکہ بھارت کی ساکھ خراب نہ ہو۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں