The news is by your side.

Advertisement

بیلجیئم : کورونا وائرس کی دوسری لہر، سخت ہدایات جاری

برسلز : بیلجیئم میں کورونا وائرس کے پھیلاؤ میں اچانک اضافہ ہونے سے کورونا کے پازیٹو کیسز یومیہ 200 سے زائد ہورہے ہیں، وزیر اعظم نے شہریوں پر نئی پابندیاں عائد کردیں۔

اس بات کا فیصلہ آج بیلجیئم کی سیاسی قیادت پر مشتمل سیکیورٹی کونسل کی میٹنگ کے بعد وزیراعظم صوفی ویلمز نے ایک پریس کانفرنس میں کیا۔

تفصیلات کے مطابق بیلجیئم میں کورونا مریضوں میں اچانک تیزی سے اضافہ ہوگیا، کورونا کی دوسری لہرسے بچنے کیلئے بیلجیئن حکومت نے نئی پابندیاں لگادیں۔

نئی پابندیوں کے مطابق گھر میں منعقد ہونے والی تقریب میں10سے زائدافراد کی شرکت پرپابندی جبکہ عمارت میں ہونے والی تقریب میں100سے زائدافراد کی شرکت پر پابندی ہوگی، کھلی فضا میں منعقدہ تقریب میں صرف 200 افراد ہی شریک ہوسکیں گے۔

اس حوالے سے وزیراعظم بیلجیئم صوفی ویلمز کا کہنا ہے کہ کرونا وائرس سے اموات قابو میں ہیں لیکن شہری ایک دوسرے سے ملنے میں بہت احتیاط سے کام لیں۔

پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے لوگوں سے اپیل کی کہ اس وبا کے دوبارہ پھیلاؤ کے حوالے سے ہمارا انفرادی کردار ہماری اجتماعی کامیابی یا ناکامی میں فیصلہ کن کردار ادا کرے گا۔

وزیراعظم بیلجیئم کا کہنا ہے کہ یہ پابندیاں4ہفتے تک نافذالعمل رہیں گی، 12سال سے کم عمر بچے پابندیوں سے مستثنیٰ ہونگے، اس کے علاوہ عوامی مقامات پر سماجی فاصلہ رکھنا،اور فیس ماسک پہننا لازمی ہوگا، حکومتی ہدایات کی خلاف ورزی پر قانون کے مطابق کارروائی کی جائے گی۔

یاد رہے کہ بیلجیئم میں کورونا وائرس کے پھیلاؤ میں اچانک اضافہ ہوگیا ہے۔ اور دو ہفتے قبل کے 80 افراد روزانہ کے مقابلے میں اب کورونا پازیٹو کیسسز 200 سے زائد ہورہے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں