The news is by your side.

Advertisement

سابق رکن کانگرنس رابرٹ بیٹو نے بھی 2020 کے صدراتی الیکشن لڑنے کا اعلان کردیا

واشنگٹن : ٹیکساس کے سابق رکن کانگریس ’رابرٹ بیٹو‘ نے بھی 2020 میں ہونے والے امریکی صدارتی انتخابات میں حصّہ لینے کا باضابطہ اعلان کردیا۔

تفصیلات کے مطابق امریکا میں آئندہ برس ہونے والے صدارتی انتخابات میں ڈونلڈ ٹرمپ کو شکست دینے اور بطور صدر صدارتی محل میں زندگی گزارنے کے خواہشمند سیاست دانوں کی تعداد میں اضافہ ہوتا جارہا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ ڈیموکریٹ سیاست دان 46 سالہ ’رابرٹ بیٹو او رارکی‘ نے کچھ ماہ سوچ بچار کے بعد ایک انٹرویو کے دوران اعلان کیا کہ ’وہ آبائی ریاست ٹیکساس سے صدارتی انتخابات میں شامل ہوں گے‘۔

مقامی میڈیا کا کہنا ہے کہ رابرٹ بیٹو پندرویں دیموکریٹ ہیں جو امریکی صدر منتخب ہونے کےلیے انتخابی میدان میں اتریں ہیں۔

ڈیموکریٹ سیاست دان رابرٹ بیٹو گزشتہ برس نومبر میں امریکا میں ہونے والے وسط مدتی انتخابات میں ریپنلیکن سینیٹر ٹڈکروز سے سخت مقابلہ کرچکے ہیں۔

خبر رساں اداروں کا کہنا ہے کہ رابرٹ بیٹو بہترین انتخابی مہم چلانے کے باوجود ناکام ہوگئے تھے لیکن یہ ٹیکساس میں دیگر ڈیموکریٹس سے کافی بہتر ہیں۔

مزید پڑھیں : آئندہ ہفتے صدارتی الیکشن میں شرکت کا باقاعدہ اعلان کروں گی، ہندو ایم پی تلسی گبّارڈ

خیال رہے کہ رابرٹ کے علاوہ سینیٹر برنی سینڈرز، سینیٹر الزبتھ وارن، سینیٹر کمالا حارث، ہندو رکن کانگریس تلسی گبارڈ اور انڈیانا کے میئر پیٹی بٹیگیگ بھی ڈیموکریٹ پارٹی کی جانب سے صدارتی امیدوار ہیں۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ 46 سالہ ڈیموکریٹ سیاست دان کو سنہ 2020 میں ہونے والے صدارتی انتخابات میں حصّہ لینے سے قبل ڈیموکریٹ پارٹی کے دیگر امیدواروں کو پارٹی الیکشن میں شکست دینا ہوگی، جو صدارتی الیکیشن سے پہلے ہوں گے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں