مودی کو بہار کے انتخابات میں شکست کا سامنا -
The news is by your side.

Advertisement

مودی کو بہار کے انتخابات میں شکست کا سامنا

پٹنہ: بھارتی ریاست بِہار نے انتہاپسندوں کی یلغارکو روک دیا، ریاستی الیکشن میں بھارتیہ جنتاپارٹی ہار گئی بھارت کی تیسری بڑی ریاست بہارمیں ریاستی انتخابات میں حکمران جماعت بی جے پی کو بد ترین شکست کا سامنا ہوا۔

لالوپرساد نے بی جےپی کو پچھاڑا جنتا دل پارٹی اور اتحاد کو واضح برتری حاصل ہوگئی،مودی سرکار کی پارٹی دوسرےنمبرپر رہی۔

بھارتی الیکشن کمیشن کے مطابق ریاست بہار میں ووٹنگ کی شرح پندرہ سال کے مقابلے میں زیادہ رہی چھپن عشاریہ پینسٹھ فیصد افراد نےحق رائےدہی استعمال کیا۔

بہار کی عوام نے مودی کے منہ پر طمانچہ رسید کر دیا ہے ،بھارتی ریاست بہارنے مودی کی انتہا پسندی کو شکست دے دی، کل 243سیٹوں میں سے جتنا دل نے 147پر کامیابی حاصل کر لی ہے جبکہ بی جے پی محض 89سیٹیں ہی لے سکی ہے اور 6 سیٹیں دیگر جماعتوں کے حصے میں آئی ہیں۔

Courtesy: Times of India

ریاست کے دارالحکومت پٹنہ میں جے ڈی یو کے وسیع اتحاد کے دفتر کے سامنے جشن کا ماحول ہے، بہار کے وزیراعلیٰ نتیش کمار نے ٹویٹر پر اپنے پیغام میں ریاست کے عوام کا زبردست حمایت کے لیے شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم اپنی فتح کے باوجود باوقار رہیں گے۔

کانگریس کے رہنما احمد پٹیل نے کہا ہے کہ راشٹریہ جنتا دل اور جنتا دل یونائٹیڈ نے محنت کی اور این ڈی اے کے جھوٹے دعووں کو شکست دے دی۔

بھارت کے سرکاری میڈیا کے مطابق نریندر مودی نے اپنی شکست تسلیم کرتے ہوئے بہار کے وزیر اعلیٰ نتیش کمار کو فون کرکے انھیں جیت پر مبارک باد دی ہے۔

بھارتی سیاستدان لالو پرساد یادیونے کہا ہے کہ نریندر مودی اور انکی جماعت کےارکان بلاوجہ بھارتیوں کو پاکستان بھیجنے پر تلے ہوئے ہیں درحقیقت خود ذہنی ہیجان میں مبتلا ہیں اور ان کے نفسیاتی مرض کا علاج ہے کہ انہیں پاکستان بھجوادیا جائے وہیں ان کا علاج ممکن ہے۔ بھارت کے سابق وزیرریلوے اس سے پہلے بھی بھارتیہ جنتا پارٹی کی پالیسیوں اور اس کے رہ نماؤں کے غیر سنجیدہ بیانات پر تنقید کرتے رہے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں