The news is by your side.

Advertisement

لیہ میں تیزاب سے متاثرہ نابینا خاتون کے ساتھ اجتماعی زیادتی

لیہ : لیہ کی رہائشی 36 سالہ خاتون کو امداد دینے کے بہانے ڈیرے پر بلا کر تین افراد نے اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا گیا،اس سے قبل انہی خاتون پر2001 میں تیزاب پھینکا گیا تھا،جس سے خاتون کی بینائی چلی گئی تھی اور چہرہ جھلس گیا تھا۔

تفصیلات کے مطابق لیہ کی چہرہ جھلسی اور بینائی سے محروم 36 سالہ خاتون کو وڈیرے نے امداد دینے کے بہانے ڈیرے پر بلاکر اپنے ساتھیوں کے ساتھ مل کر اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا،بینائی سے محروم ہونے کی وجہ سے خاتون وڈیرے کے ساتھیوں کو پہچاننے سے قاصر ہیں۔

ذرائع کے مطابق زیادتی کا نشانہ بننے والی خاتون اس سے قبل 2001 میں نامعلوم افراد کی جانب سے ’’تیزاب گردی‘‘ کا شکار بھی بنی تھی،چہرے پر تیزاب پھینکے جانے کے باعث خاتون کا چہرہ جھلس گیا تھا اور اُس کی بینائی ہمیشہ کے لیے ختم ہو گئی تھی۔

بینائی سے محروم خاتون کو امداد کے بہانے بلا کر تین افراد نے زیادتی کا نشانہ بنانے پر متاثرہ خاتون کو میڈیکل چیک اپ کے لیے ہسپتال لے جایا گیا،جہاں لیڈی ڈاکٹر نے طبی معائنے کے بعد خاتون کے ساتھ اجتماعی زیادتی ہونے کی تصدیق کر دی۔

خاتون کے ساتھ زیادتی ہونے کی تصدیق کے بعد پولیس نے فوری کاروائی کرتے ہوئے وڈیرے کے ڈیرے پر چھاپے مارکر تین میں سے دو ملزمان کو گرفتار کر لیا جب کہ ایک ملزم فرار ہو گیا۔

وزیرِ اعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے واقعہ کو فوری نوٹس لیتے ہوئے ڈی پی او لیہ کو ملزمان کو گرفتار کر کے کیفر کردار تک پہنچانے کی ہدایت کرتے ہوئے ،کیس کی مکمل رپورٹ وزیرِ اعلیٰ ہاؤس میں جمع کرانے کا حکم دیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں