بورس جانسن نے اہلیہ مرینہ وئیلر سے علیحدگی کی تصدیق کردی boris-johnson
The news is by your side.

Advertisement

بورس جانسن نے اہلیہ مرینہ وئیلر سے علیحدگی کی تصدیق کردی

لندن : برطانیہ کے سابق وزیر خارجہ اور ان کی اہلیہ سے متعلق گردش کرنے والی خبروں کی بورس جانسن نے تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ ’بہت جلد ہم قانونی طور پر علیحدہ ہوجائیں گے‘۔

تفصیلات کے مطابق برطانیہ کے سابق وزیر خارجہ بورس جانسن اور ان کی اہلیہ مرینہ وئیلر نے اپنے علیحدہ ہونے کی تصدیق کرتے ہوئے مشترکہ بیان میں بتایا ہے کہ ’ہم کچھ مہینوں سے علیحدہ ہیں اور بہت جلد ہمارے درمیان طلاق ہونے والی ہے‘۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ سابق وزیر خارجہ اور ان کی اہلیہ کے درمیان گھریلو تنازعے کی خبر برطانوی اخبار ’دی سن‘ نے شائع کی تھی۔

برطانوی میڈیا کا کہنا ہے کہ بورس جانسن اور مرینہ کی 25 برس قبل شادی ہوئی تھی تاہم انہوں نے علیحدہ ہونے کا فیصلہ کچھ ماہ قبل ہی کیا ہے۔

مقامی میڈیا کا کہنا تھا کہ تھریسا مے کی بریگزٹ منصوبہ بندی پر بورس جانسن کے کابینہ سے استعفیٰ دینے کے بعد سے انہیں ٹوری پارٹی کا مستقبل کے سربراہ کی حیثیت سے پیش کیا جارہا تھا۔

شوہر اور اہلیہ نے مشترکہ بیان میں بتایا ہے کہ طلاق کی درخواست منظوری کے مراحل میں ہے، لیکن ہم ایک دوست کی طرح اپنے بچوں کی معاونت جاری رکھیں گے تاہم اس کے علاوہ ہمارے درمیان کوئی تعلق نہیں ہوگا۔

واضح رہے کہ جانسن اور وئیلر کی شادی سنہ 1993 میں ہوئی تھی اور بورس جانسن کے مرینہ وئیلر سے چار بچے ہیں ’لارا، میلو آرتھر، کاسیہ، تھیوڈور‘جو اپنے والدین کے ساتھ ہی رہتے ہیں۔

خیال رہے کہ بورس جانسن کچھ دو برس قبل برطانیہ کے وزیر خارجہ منتخب ہوئے تھے، جبکہ اس سے قبل وہ 3 سال یوایس برج کے ایم پی، 8 برس تک لندن کے میئر، 7 سال ہینلی کے ایم پی اور 6 سال تک اسپیکٹر کے ایڈیٹر رہ چکے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں