The news is by your side.

Advertisement

ہوا سے ہیرے بنانا ممکن؟

ہیرا ویسے تو دنیا کی قیمتی ترین دھاتوں میں سے ایک ہے اور اسے حاصل کرنا بھی بہت مشکل ہے، تاہم اب نہایت انوکھے طریقے سے ہیرے بنانے کا تصور پیش کردیا گیا ہے۔

دنیا کے ممتاز کاروباری جریدے فاربس کے مطابق سوئٹزر لینڈ کی ایک کمپنی نے ہیرے بنانے کا نیا اور اچھوتا تصور پیش کردیا ہے۔

لگژری زیورات بنانے والی اس کمپنی کا کہنا ہے کہ وہ ہوا سے کشید کی گئی کاربن ڈائی آکسائیڈ کی مدد سے لیبارٹری میں ہیرے تخلیق کرے گی۔

کمپنی کے چیئرمین ریان شیرمین نے فاربس کو اس منصوبے کی تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ بظاہر تو یہ تصور بہت عجیت اور ناممکن لگتا ہے، لیکن ہم ہوا میں موجود کاربن ڈائی آکسائیڈ کو لیبارٹری میں جواہرات کی تیاری میں استعمال کرنے کے منصوبے کو عملی شکل دینے کے لیے کام کر رہے ہیں۔

لیبارٹری میں اس سے بننے والے ہیرے دکھنے میں کان کنی سے حاصل ہونے والے ہیروں کی طرح ہی ہوں گے۔

ان کا کہنا ہے کہ اس اقدام سے فضائی آلودگی میں بھی بہت کمی آئے گی، کیوں کہ ایک قیراط کے ہر ایک ہیرے کو بنانے کے لیے ہوا سے 2 ٹن کاربن ڈائی آکسائیڈ کشید کی جائے گی۔

ریان کا مزید کہنا تھا کہ اس منصوبے کو عملی شکل دینے کے لیے ہم 18 ملین ڈالراستعمال کرنے کی منصوبہ بندی کر رہے ہیں، وہ وقت دور نہیں جب ہم ماحول دوست ہیروں سے بنے زیورات استعمال کر رہے ہوں گے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں