The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب : نئے اکاؤنٹس کھولنے کیلئے بینکوں کو ہدایات جاری

سعودی سینٹرل بینک ساما نے بینکوں کو ہدایت کی ہے کہ وہ نئے حفاظتی اقدامات کے تحت افراد یا اداروں کے لیے آن لائن اکاؤنٹس کھولنے کے آپشن کو روک دیں۔

سعودی ذرائع ابلاغ کے مطابق10 اپریل سے لاگو ہونے والے نئے اقدامات کے تحت اکاؤنٹس صرف برانچوں کے ذریعے کھولے جائیں گے۔

روزنامہ عکاظ کے مطابق مقامی بینکوں جیسے الراجعی بینک نے اپنے ٹویٹر اکاؤنٹ پر اس کا اعلان کیا ہے۔ دیگر اقدامات میں یومیہ الیکٹرانک منتقلی کی حد اور24 گھنٹے بین الاقوامی منتقلی کا انعقاد شامل ہے۔

عرب نیوز کی جانب سے دیکھے گئے ایک سرکلر کے مطابق ساما نے بینکوں سے یہ بھی کہا ہے کہ وہ غیر سعودی صارفین کو آن لائن بینیفشریز میں شامل کرنے کی اجازت دینا بند کریں۔

بینکوں سے درخواست کی جاتی ہے کہ وہ الیکٹرانک سروسز قائم کرنے، پاس ورڈ تبدیل کرنے، کارڈ جاری اور ایکٹو کرنے کی درخواست پر شناخت کی تصدیق کے لیے ایک سے زیادہ معیارات کا اطلاق کریں اور کسی دوسرے چینل جیسے کہ فون کال کے ذریعے درخواست کی تصدیق کریں۔

اقدامات میں پہلے سے شامل کیے گئے صارفین کے لیے ہر رقم کی منتقلی کے لین دین کے لیے مزید کثیرعنصری تصدیقی معیارات کا اطلاق کرنا شامل ہے۔

سعودی سینٹرل بینک ساما نے سرکلر میں وضاحت کی ہے کہ نئے فیصلے ایسے وقت میں سامنے آئے جب حال ہی میں ایسے پلیٹ فارمز جو سامان فروخت کرتے یا خدمات فراہم کرتے ہیں، میں دھوکہ دہی میں اضافہ دیکھا گیا ہے۔

ساما نے مزید کہا ہے کہ بینکوں کی طرف سے روایتی اور الیکٹرانک چینلز کے ذریعے فراہم کی جانے والی مالیاتی خدمات میں نمایاں اور تیز رفتار ترقی کی وجہ سے مالی فراڈ میں اضافہ ہوا ہے۔

ساما کے سرکلر نے بہت سے چیلنجوں کا انکشاف کیا جنہوں نے مملکت میں دھوکہ دہی کی کارروائیوں کو بڑھانے میں اہم کردار ادا کیا ہے۔

ساما نے بینکوں سے یہ بھی کہا ہے کہ وہ پانچ دنوں کے اندر دیگر اقدامات کے لیے ایک منصوبہ پیش کریں جو دو ماہ کے اندر لاگو کیا جائے۔ ان اقدامات میں اینٹی فراڈ سسٹم کے بنیادی ڈھانچے میں سرمایہ کاری شامل ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں