The news is by your side.

Advertisement

مسئلہ کشمیر پر امریکی سینیٹرز کی حمایت پر ان کے شکر گزار ہیں، صادق سنجرانی

اسلام آباد : چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی نے کہا ہے کہ کشمیر کے مسئلے پر امریکی سینیٹرز کی حمایت پر ان کے شکر گزار ہیں، افغانستان کا مسئلہ سیاسی ہے اس کا مذاکرات کے ذریعے حل نکالنا ہوگا۔

یہ بات انہوں نے اسلام آباد میں امریکی سینیٹرز کے وفد سے ملاقات کے موقع پر کہی۔ تفصیلات کے مطابق اسلام آباد میں چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی سے امریکی سینیٹرز کے وفد نے ملاقات کی۔

ملاقات میں باہمی دلچسپی کے امور سمیت علاقائی دوطرفہ تعلقات اور عالمی امور پر تبادلہ خیال کیا گیا، امریکی وفد میں سینیٹرز کرسٹوفر جے وان ہولین اور مارگریٹ سی حسن شامل تھے۔

ملاقات میں افغان امن عمل اورحالیہ ڈائیلاگ پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا اور دو طرفہ تعلقات، دوطرفہ روابط، تجارتی معاونت کو مزید فروغ دینے پر اتفاق کیا گیا، اس موقع پر چیئرمین سینیٹ نے مقبوضہ کشمیر کی حالیہ صورتحال سے امریکی سینیٹرز کو آگاہ کیا۔

چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کا کہنا تھا کہ امریکی وفد کا دورہ انتہائی اہم ہے، رلیمانی سفارت کاری اور تعاون سے عوامی روابط کو بڑھایا جاسکتا ہے، حقائق کو سامنے رکھ کر امن اور ترقی کو موقع دینا لازمی ہے، پاکستان خطے میں امن کی کاوشوں کی حمایت جاری رکھے گا۔

کشمیر کے حوالے سے چیئرمین سینیٹ کا کہنا تھا کہ کشمیر کے مسئلے پر امریکی سینیٹرز کی حمایت پر شکرگزار ہیں، مقبوضہ کشمیر میں63دن سے کرفیو نافذ ہے، کرفیو کے باعث انسانی بحران کی کیفیت پیدا ہوچکی ہے، بھارت نے وادی کو کھلی جیل بنادیا ہے۔

صادق سنجرانی نے کہا کہ دنیا اسے ایک انسانی مسئلہ سمجھ کر اپنا کردار ادا کرے، مقبوضہ کشمیرکے عوام کو ظلم و جبرکا نشانہ بنایا جارہا ہے، امریکا کشمیر میں بھارتی ظلم وجبر رکوانے کیلئے اپنا کردارادا کرے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان نے عالمی امن کی خاطر لازوال قربانیاں دی ہیں، دنیا کو چاہیے کہ پاکستان کی قربانیوں کو تسلیم کرے، پاکستان افغانستان میں دیرپا امن کا خواہاں ہے، افغانستان کا مسئلہ سیاسی ہے، مذاکرات کے ذریعےحل نکالنا ہوگا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں