The news is by your side.

Advertisement

چین میں فلک بوس عمارتوں کی تعمیر مشکل ہو گئی

بیجنگ: چین نے چھوٹے شہروں میں فلک بوس عمارتوں کی تعمیر پر پابندی لگا دی۔

تفصیلات کے مطابق چین نے نئی فلک بوس عمارتوں کی تعمیر پر سخت پابندیاں عائد کر دی ہیں، چین نے کہا ہے کہ خصوصی منظوری کے بغیر 30 لاکھ سے کم آبادی والے شہروں میں 150 میٹر سے اونچی اسکائی اسکریپر نہیں بنائی جائیں گی۔

ہاؤسنگ اور شہری دیہی ترقی کی وزارت نے منگل کو کہا کہ تیس لاکھ سے زیادہ آبادی والے شہروں کو 250 میٹر سے زیادہ بلند عمارتیں تعمیر کرنے کی اجازت نہیں ہوگی، اس وقت 500 میٹر سے بلند عمارتیں تعمیر کرنے پر پابندی عائد ہے، تاہم اب اس پابندی کو مزید سخت کر دیا گیا ہے۔

وزارت کا کہنا تھا کہ اس نئے قاعدے کی خلاف ورزی کرتے ہوئے ایسے منصوبوں کی منظوری دینے والے سرکاری اہل کاروں کو ‘زندگی بھر کے لیے جواب دہ’ قرار دیا جائے گا، جس کا مطلب یہ ہوگا کہ ایسے حکام قواعد کی خلاف ورزی کے سلسلے میں مستقبل میں کسی بھی سزا کے حق دار ہوں گے۔

اگرچہ چین تسلیم کرتا ہے کہ بلند و بالا عمارتیں زمینی وسائل کے زیادہ گہرے استعمال کو فروغ دیتی ہیں، لیکن اسے اس بات پر تشویش ہے کہ مقامی حکام عملی پہلو اور حفاظت پر بہت کم توجہ دے کر اندھا دھند تعمیرات کر رہے ہیں۔

رواں سال کے شروع میں، شینزین شہر میں ایک 356 میٹر اور 71 منزلہ بلند ٹاور بار بار لرزتا رہا، جس سے تحفظ کے بارے میں خدشات پیدا ہوئے، تحقیقات سے پتا چلا کہ اس کی وجہ عمارت کے اوپر بنایا گیا 50 میٹر سے زیادہ لمبا مستول تھا جو ہوا میں حرکت کرتا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں