The news is by your side.

Advertisement

پاکستانی نوجوان کو کچلنے والے امریکی ملٹری اتاشی کوامریکا روانہ کردیا گیا: سفارتی ذرایع

دفتر خارجہ کے ذرایع نے دعویٰ کیا ہے کہ امریکی ملٹری کرنل جوزف کواستثنیٰ حاصل ہے

اسلام آباد: پاکستانی نوجوان کو کچلنے والے امریکی ملٹری اتاشی کرنل جوزف کوامریکا روانہ کردیا گیا، کرنل جوزف کو خصوصی پرواز سےروانہ کیا گیا.

سفارتی ذرایع نے دعویٰ کیا ہے کہ یہ فیصلہ امریکی ملٹری اتاشی کرنل جوزف کو حاصل استثنیٰ کی وجہ سے کیا گیا۔

ذرائع دفتر خارجہ کے مطابق کرنل جوزف کے خلاف سفارتی استثنیٰ کی وجہ سے کارروائی نہیں کی جاسکتی، ویانا کنونشن 1961 کے تحت کرنل جوزف کواستثنیٰ حاصل ہے.

سفارتی ذرائع کے مطابق 1972 کے پاکستانی قانون کے تحت کرنل جوزف کواستثنیٰ ہے، کرنل جوزف سےمتعلق پولیس کاریکارڈامریکا کے حوالے کر دیا گیا ہے.

ذرایع نے یہ دعویٰ کیا ہے کہ کرنل جوزف کے خلاف امریکی حکام کی جانب سے کارروائی کی یقین دہانی کرائی گئی ہے.

یاد رہے کہ گذشتہ دونوں اسلام آباد ہائی کورٹ نے امریکی سفارت کار کرنل جوزف کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کے حوالے سے مقتول عتیق کے والد کی درخواست پرفیصلہ سنایا تھا، جس کے مطابق ملزم کرنل جوزف کو مکمل استثنیٰ حاصل نہیں تھا۔ البتہ اب سفارتی ذرایع نے دعوی کیا ہے کہ امریکی ملٹری اتاشی کو امریکا کر دیا گیا ہے.

خیال رہے کہ گذشتہ ماہ 7 اپریل کو امریکی ملٹری اتاشی نے اسلام آباد کے علاقے بارہ کہو کے قریب سگنل توڑ کر موٹرسائیکل سوار دو افراد کو کچل دیا تھا۔

حادثے میں عتیق بیگ نامی نوجوان موقع پرجاں بحق اور اس کا کزن شدید زخمی ہوگیا تھا جبکہ پولیس نے سفارتی استثنیٰ کے باعث کرنل جوزف کو جانے کی اجازت دے دی تھی۔


ملزم کرنل جوزف کومکمل استثنیٰ حاصل نہیں‘ اسلام آباد ہائی کورٹ


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

 

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں