The news is by your side.

Advertisement

کورونا وائرس دنیا بھر سے 11 ہزار 402 افراد کی جان لے گیا

کراچی : دنیا بھر میں کرونا وائرس کے باعث اموات 11 ہزار 402 ہوگئیں، جان لیوا جرثومے سے متاثرہ مریضوں کی تعداد 2 لاکھ67ہزار سے زائد ہے جبکہ 91ہزار952افراد صحت یاب ہوچکے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق دنیا بھر میں کورونا وائرس سے اموات کا سلسلہ رکنے کا نام نہیں لے رہا، کورونا وائرس سے عالمی سطح پر 11ہزار 402 افراد موت کے منہ میں جاچکے ہیں۔

سب سے متاثر ہونے والا ملک اٹلی ہے جس نے چین کو بھی پیچھے چھوڑ دیا،اٹلی میں اس جان لیوا کورونا سے مرنے والوں کی تعداد4ہزار 32 ہوگئی جبکہ47 ہزار افراد اب بھی اسپتالوں میں داخل ہیں۔

اس کے علاوہ اسپین میں کورونا وائرس سے1093اموات ہوئیں اور 21 ہزار سے زائد افراد متاثر ہیں، امریکا میں کورونا وائرس سے264افراد لقمہ اجل بن گئے، امریکہ کے اسپتالوں میں19 ہزار 640 مریض زیر علاج ہیں۔

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق فرانس میں450 افراد موت کا شکار ہوئے اور وائرس سے متاثر ہونے والے افراد کی تعداد12ہزارہوگئی ہے، سعودی عرب میں 344 افراد کرونا وائرس سے متاثر ہوئے۔

انڈونیشیا میں کورونا کے60 نئے کیس رپورٹ ہوئے ہیں یہاں اموات کی تعداد 32 ہوگئی، ملائیشیا میں مہلک کورونا وائرس کے130 نئے کیس رپورٹ ہو چکے ہیں یہاں پر متاثرہ مریضوں کی تعداد ایک ہزار 30 تک جا پہنچی ہے۔

بھارت میں کورونا کیسز کی تعداد 258 ہوگئی جبکہ 5 افراد کے ہلاک ہونے کی اطلاعات ہیں، اس کے علاوہ دنیا بھر میں کورونا وائرس کا شکار ہوکر بیمار ہونے والے91ہزار952افراد صحت یاب ہوکر اپنے گھروں کو لوٹ چکے ہیں۔

پاکستان میں کرونا وائرس کے باعث 3 افراد زندگی کی بازی ہار گئے جبکہ مریضوں کی تعداد 449 ہے۔ کرونا وائرس کے مریضوں کی سب سے زیادہ تعداد 245 سندھ سے ہے، بلوچستان میں 81، پنجاب 78، کے پی میں 23 کرونا وائرس کے مریض زیرعلاج ہیں۔

رپورٹ کے مطابق اسلام آباد میں 9، گلگت بلتستان 12، ایک کرونا وائرس کے مریض کا تعلق آزاد کشمیر سے ہے، ملک بھر میں 216مقامات پر 2942 افراد کے لیے آئسولیشن گنجائش موجود ہے۔

ملک بھر میں 139 مقامات پر 23 ہزار 557 افراد کے لیے قرنطینہ سینٹر قائم ہیں، تفتان میں ایران سے آنے والے 600 زائرین کے لیے قرنطینہ سینٹر موجود ہے۔ اسی طرح چمن اور طورخم میں بھی مجموعی طور پر 600 افراد کے لیے قرنطینہ قائم کردئیے گئے ہیں۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں