The news is by your side.

Advertisement

کرونا وائرس کی تشخیص اب پاکستان میں بھی ممکن

اسلام آباد : چین سے کروناوائرس کی تشخیصی کٹس آج شام تک پاکستان پہنچ جائیں گی، جس کے بعد قومی ادارہ صحت کرونا وائرس کا تشخیصی ٹیسٹ کر سکے گا۔

تفصیلات کے مطابق چین سے کرونا وائرس کی تشخیصی کٹس پاکستان کیلئے روانہ کردیں گئیں ہیں ، وائرس کی ٹیسٹنگ کٹس 24گھنٹےمیں پاکستان پہنچیں گی اور قومی ادارہ صحت کے حوالے کی جائیں گی۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ پاکستان نےچین سے کرونا ٹیسٹنگ کٹس کی فراہمی کی درخواست کی تھی ، کٹس ملنے پر قومی ادارہ صحت کرونا وائرس کا تشخیصی ٹیسٹ کرسکےگا۔

ذرائع کے مطابق اس سے پہلے کرونا کی تشخیص کیلئے سیمپل ہانگ کانگ بھجوائے جارہےتھے، چین سےمحدودتعدادمیں کروناٹیسٹنگ کٹس منگوائی گئی ہیں، ضرورت پڑنےپرچین سےمزیدٹیسٹنگ کٹس منگوائی جائیں گی۔

مزید پڑھیں : کرونا وائرس کا پاکستان میں خطرہ ہے، ڈاکٹر ظفر مرزا

دوسری جانب وزارت میری ٹائم افیئرز نے بھی کرونا وائرس سےبچاؤکے اقدامات تیز کردیئے ہیں اور غیرملکی بحری جہازوں کےعملےکی بندرگاہ سے باہرنکلنےپرپابندی عائدکر دی جبکہ تین بڑی بندرگاہوں کے پی ٹی، پورٹ قاسم،گوادرپورٹ کے چیئرمینوں کوخط بھی لکھ دیئے گئے ہیں۔

گذشتہ روز معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے پروگرام ’پاور پلے‘ میں گفتگو کرتے ہوئے کہا تھا کہ کرونا وائرسز کی فیملی ہے، یہ وائرس کی پانچویں قسم ہے، پاکستان میں اب تک کرونا وائرس کا کوئی کیس رپورٹ نہیں ہوا، وائرس 18 ممالک میں پھیل چکا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ کرونا وائرس کا مرکز چین ہے، چین نے ووہان شہر کو قبضے میں لے لیا ہے اور وہاں سے کسی شخص کو باہر نہیں آنے دیا جارہا۔

ڈاکٹر ظفر مرزا نے کہا تھا کہ چینی شہری پاکستان آتے جاتے ہیں اس لیے وائرس کا خطرہ ہے، ووہان میں موجود لوگ ہیں انہیں باہر آنے کی اجازت نہیں، جو چینی باشندہ پاکستان آئے گا تو وائرس کا خدشہ ہے، پاکستانی 500 سے زائد طلبہ ووہان میں ہیں، کرونا وائرس پر جلد قابو نہ پایا گیا تو یہ دنیا میں تیزی سے پھیل سکتا ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں