The news is by your side.

Advertisement

ڈارک ویب پر غیر قانونی کاروبار میں ملوث 38 ممالک سے سینکڑوں ملزمان گرفتار

لندن : برطانیہ اور امریکہ کے تفتیش کاروں نے ڈارک ویب پر موجود بچوں سے بد فعلی پر مبنی ویڈیوز کی ویب سائٹ پر تحقیق کر کے مختلف ممالک سے 337 افراد کو گرفتار کر لیا ہے ۔

تفصیلات کے مطابق برطانیہ کی سرکاری ایجنسی این سی اے نے بتایا کہ ویب سائٹ پر 2 لاکھ 50 ہزار ویڈیو موجود تھیں جن کو پوری دنیا سے مختلف افراد نے10 لاکھ بار ڈاون لوڈ کیا تھا۔

ویب سائٹ پر ویڈیوز اپ لوڈ کرنے والوں کو ڈیجیٹل کرنسی میں ادائیگی کی جاتی تھی۔

تفتیش کاروں نے 38 ممالک سے 337 افراد کو گرفتار کیا ہے جن میں برطانیہ، آئرلینڈ، امریکہ،جنوبی کوریا، جرمنی، اسپین، سعودی عرب، متحدہ عرب امارات، کینیڈ اور چیک ری پبلک کے باشندے شامل ہیں۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ مذکورہ ویب سائٹ جنوبی کوریا سے چلائی جا رہی تھی اس لیے مقامی پولیس سے بھی مدد لی گئی تھی۔

امریکا کے محکمہ انصاف کے مطابق یہ بچوں سے بد فعلی پر مبنی ویڈیوز کی سب سے بڑی ویب سائٹ تھی جس کو بند کردیا گیا ہے۔

دنیا کا سب سے بڑا پورنوگرافی نیٹ ورک بے نقاب

برطانوی حکام کا کہنا ہے اس نوعیت کے کیس میں پہلے مجرم کو 2017 میں گرفتار کیا گیا تھا اس کو تین سالہ بچی کے ساتھ بد فعلی کے جرم میں 22 سال قید کی سزا سنائی گئی ہے۔

خیال رہے کہ ڈارک ویب پر جانے کے لیے مخصوص سوفٹ ویئر استعمال کیا جاتا ہے اور یہ ویب غیرقانونی سرگرمیوں کے لیے مقبول ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں