The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب میں میٹھے پانی کا قدیم چشمہ دریافت

ریاض : سعودی عرب کے وسط میں میٹھے پانی کا قدیم ترین چشمہ دریافت ہوا ہے، جشمہ دریافت کرنے والے سعودی فوٹو گرافر کا کہنا ہے کہ جشمہ مصنوعی نہیں بلکہ یہاں سے قدرتی طور پر پانی پھوٹ کر باہر نکلتا ہے۔

عرب خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق سعودی عرب کے تاریخی مقامات کی تصاویر جمع کرنے کے شوقین فوٹو گرافر عبدالالہ الفارس نے اپنی تصاویر میں مملکت کے وسط میں میٹھے پانی کے ایک قدیم ترین کنوئیں کا سراغ لگایا۔

پانی کا یہ جشمہ نہ صرف سعودی عرب بلکہ جزیر العرب کا قدیم ترین جشمہ تصور کیا جاتا ہے۔

عرب میڈیا کے مطابق خفس نامی یہ جشمہمیٹھے پانی کا پرانا جشمہ ہے، یہ مصنوعی جشمہ نہیں بلکہ یہاں سے قدرتی طور پر پانی پھوٹ کر باہر نکلتا اور نہ صرف آس پاس کے کھیتوں کھلیانوں کو سیراب کرتا ہے بلکہ وہاں سے گذرنے والے مسافروں، راہ گیروں اور عام شہریوں اور ان کی مویشیوں کی پیاس بھی بجھاتا ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں