The news is by your side.

Advertisement

جج ارشد ملک کی برطرفی، نوازشریف نے سزا کیخلاف درخواست تیار کرلی

اسلام آباد : احتساب عدالت کےجج ارشدملک کی برطرفی کےبعد نوازشریف نےسزاکیخلاف درخواست تیار کرلی، جس میں کہا گیا آئینی طور پر سزا سنانے والا جج عہدے سے برطرف ہوتو سزا کی کوئی حیثیت نہیں، سزا کالعدم قرار دی جائے۔

تفصیلات کے مطابق احتساب عدالت کے جج ارشدملک کی عہدے سے برطرفی کے بعد سابق وزیراعظم نوازشریف کی ہدایت پر خواجہ حارث نے سزا کیخلاف درخواست تیارکرلی، درخواست میں وفاق اور احتساب عدالت کو فریق بنایا گیا ہے۔

نوازشریف سزاکیخلاف اسلام آباد ہائی کورٹ میں آج درخواست دائر کئے جانے کا امکان ہے، درخواست میں کہا گیا ہے کہ احتساب عدالت کےجج ارشدملک کو عہدے سے برطرف کیا گیا ہے، نوازشریف کوارشدملک نے سزا اور جرمانے کا حکم سنایا تھا۔

درخواست میں کہا ہے کہ آئینی طورپرسزا سنانے والا جج عہدےسےبرطرف ہوتوسزاکی کوئی حیثیت نہیں، اسلام آباد ہائی کورٹ میں نوازشریف کی اپیل بھی زیرسماعت ہے، عدالت نواز شریف کی سزا کو کالعدم قرار دے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ نوازشریف نے وکالت نامے پر دستخط کرکے خواجہ حارث کے حوالے کر دیا۔

یاد رہے 3 جولائی کو سابق وزیراعظم نواز شریف کے خلاف فیصلہ دینے والے جج ارشد ملک کو برطرف کردیا گیا تھا ، ارشدملک کیخلاف ویڈیواسکینڈل کی تحقیقات مکمل ہونے پر برطرفی کا فیصلہ کیا گیا۔

خیال رہے ارشد ملک اسلام آباد کی احتساب عدالت میں جج تعینات تھے ، انھوں نےچوبیس دسمبردو ہزار اٹھارہ کو نوازشریف کوالعزیزیہ کرپشن ریفرنس میں سات سال سزا سنائی تھی اور فلیگ شپ کیس میں بری کیا تھا۔

جس کے بعدجج ارشد ملک کا ویڈیو اسکینڈل منظر عام پر آیا تھا، ارشدملک نےنوازشریف اورحسین نوازسےملاقاتوں کا اعتراف کیا تھا، یہ معاملہ سپریم کورٹ بھی پہنچا اور اس وقت کے چیف جسٹس پاکستان نے 23 اگست 2019 کو حکم نامے میں کہا تھا کہ نوازشریف کی سزاکا فیصلہ اسلام آباد ہائی کورٹ ہی کرسکتی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں