The news is by your side.

Advertisement

یورپ میں خدا کا قہر، شہری گرمی سے بلبلا اٹھے

فرانس: یورپ میں شدید گرمی کا سلسلہ بدستور جاری ہے، حکومت نے مختلف شہروں کا درجہ حرارت کم کرنے کے لیے عوامی مقامات پر فوارے لگا دیے۔

تفصیلات کے مطابق یورپ کے مختلف علاقے گزشتہ دو روز گرمی کی شدید لپیٹ میں ہیں جس کے باعث وہاں کے شہری بلبلا اٹھے، آج فرانس میں درجہ حرارت 48 سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا۔

حکومت نے شہریوں کو گرمی سے بچانے کے لیے عوامی مقامات پر فوارے لگا دیے اور الرٹ جاری کیا ہے کہ کوئی بھی شخص بلاوجہ بالخصوص دوپہر کے وقت گھروں یا دفاتر سے باہر نہ نکلے۔

دوسری جانب برطانیہ میں بھی گرمی کی لہر جاری ہے، شمالی مشرقی علاقوں میں بارش کے بعد درجہ حرارت کچھ کم ضرور ہوا مگر سورج کی تپش بدستور برقرار ہے۔

مزید پڑھیں: برطانیہ میں شدید گرمی، چالیس سالہ ریکارڈ ٹوٹ گیا

خیال رہے کہ برطانیہ کے مختلف علاقوں میں سورج آگ برسا رہا ہے، لندن سمیت مختلف شہروں میں گرمی کا چالیس سالہ ریکارڈ ٹوٹ گیا۔

شہری گرمی سے بچنے کے لیے ساحل کا رخ کررہے ہیں جبکہ محکمہ موسمیات نے شہریوں کو احتیاط برتنے کی ہدایت کی ہے، میٹ آفس کے مطابق بارشوں کی کمی کے باعث سرسبزوشاداب علاقے اجڑنا شروع ہوگئے اور اسی باعث گرمی میں مزید اضافے کا امکان بھی ہے۔

قبل ازیں برطانیہ کی تاریخ میں جولائی کا سب سے زیادہ درجہ حرارت 2015 میں 36.7 ڈگری سینٹی گرڈ ریکارڈ کیا گیا تھا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات  کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

 

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں