The news is by your side.

یورپ کو 500 سال بعد بڑے خطرے نے گھیر لیا

برسلز: یورپ کو 500 سال میں پہلی بار بدترین خشک سالی کے عفریت نے گھیر لیا۔

تفصیلات کے مطابق برِّ اعظم یورپ کا تین تہائی علاقہ خشک سالی کی زد میں آ گیا ہے، گلوبل ڈراٹ آبزرویٹری کی رپورٹ کے مطابق بر اعظم یورپ کے 47 فی صد علاقوں میں خشک سالی جیسے حالات موجود ہیں۔

سینتالیس فی صد یورپی خطے میں زمین کی مٹی سوکھ چکی ہے، 17 فی صد یورپی علاقوں میں گھاس، پھوس اور سبزے کے خاتمے کی علامات ظاہر ہو چکی ہیں۔

گلوبل ڈراٹ آبزرویٹری نے انتباہ میں کہا کہ خشک سالی کا اثر فصلوں کی پیداوار پر پڑے گا، اور خشک سالی کے باعث جنگلات میں آگ بھی بھڑک سکتی ہے، اور خشک سالی یورپ کے کچھ جنوبی علاقوں میں مزید کئی ماہ تک جاری رہ سکتی ہے۔

برطانیہ کے مختلف حصوں میں خشک سالی کا اعلان

رپورٹ میں خبردار کیا گیا کہ یورپ کے تقریباً تمام دریا کسی نہ کسی حد تک خشک ہو چکے ہیں۔

امریکا میں خشک سالی سے صورت حال انتہائی خراب ہو گئی

یورپی یونین کی پیش گوئیوں کے مطابق پچھلے پانچ سالوں کے مقابلے میں مکئی کی فصل 16 فی صد، سویابین کی 15 فی صد اور سورج مکھی کی فصل 12 فی صد کم ہوگی۔

خیال رہے کہ خشک سالی کی آبزرویٹری یورپی کمیشن کے ریسرچ ونگ کا حصہ ہے، اس رپورٹ پر کمیشن نے متنبہ کیا ہے کہ ابتدائی اعداد و شمار سے پتا چلتا ہے کہ موجودہ خشک سالی کم از کم 500 سالوں کے بعد بدترین دکھائی دیتی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں