The news is by your side.

Advertisement

انتخابات 100 فیصد شفاف تھے، نتائج میں تاخیر کا سبب آرٹی ایس سسٹم کی خرابیاں بنیں: چیف الیکشن کمشنر

اسلام آباد: چیف الیکشن کمشنر سردار رضا نے کہا ہے کہ انتخابات 100 فیصد شفاف اور غیر جانبدار ہوئے، نتائج میں تاخیر کا سبب آرٹی ایس سسٹم کی خرابیاں بنیں۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا، چیف الیکشن کمشنر کا کہنا تھا کہ پاک فوج اور چیف جسٹس کا شکر گزار ہوں، الیکشن میں بھرپور شرکت کرنے پر قوم کا بھی مشکور ہوں، رزلٹ ٹرانسمیشن سسٹم میں تکنیکی خرابی ہوئی، صرف 2 گھنٹے کی تاخیر سے افسانے بن گئے۔

انہوں نے کہا کہ دو گھنٹے کی تاخیر ہوئی الیکشن پر کوئی داغ نہیں لگا، ہم ٹھیک ہیں 5 سیاسی جماعتیں غلط ہوسکتی ہیں، تاخیر کا مطلب نتائج میں گڑبڑ کہاں سے ہوگئی؟ ناکامی نہیں ہوئی، کچھ مسائل ہوئے ہیں۔

سردار رضا کا کہنا تھا کہ رزلٹ ٹرانسمیشن سسٹم پر سائبر حملے کی اطلاع ملی تو کارروائی ہوگی، ن لیگ نے کچی پرچیوں کی 7 شکایات درج کرائی ہیں، ن لیگ نے فارم 45 کے بجائے سادے کاغذ پر نتیجے کی شکایت کی، تاہم اب نتائج آنا شروع ہوگئے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ الیکشن میں معانت کرنے والے اداروں کا شکرگزار ہوں، تمام ضلعی افسران کا بھی مشکور ہوں، امن وامان برقرار رکھنے کے لیے آرمی چیف کا بھی شکرگزار ہوں۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ 2013 میں پہلے نتیجے کا اعلان رات ڈیڑھ بجے کیا گیا تھا، انتخابات 2018 کامیاب ہوئے ہیں، کسی قسم کی دھاندلی نہیں ہوئی۔

چیف الیکشن کمشنر کا پہلے غیر حتمی نتیجے کا اعلان

 چیف الیکشن کمشنر سردار رضا نے پہلے غیر حتمی نتیجے کا اعلان کردیا جس کے مطابق پی پی 11 راولپنڈی 6 سے پی ٹی آئی کے امیدوار کامیاب قرار پائے، پی ٹی آئی کے چوہدری عدنان نے 43079 ووٹ حاصل کیے، جبکہ ن لیگ کے راجہ ارشد محبوب 24 ہزار 52 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں