جرمن حکام کا نسل پرستی کے خلاف جنگ میں مؤثر اقدامات پر زور: Germany
The news is by your side.

Advertisement

ملک کے شہری نسل پرستی کے خلاف جنگ میں فعال کردار ادا کریں: جرمن وزیر خارجہ

برلن: جرمنی کے وزیر خارجہ ہائیکو ماس نے کہا ہے کہ جرمن شہری نسل پرستی کے خلاف جنگ میں موثر اور فعال کردار ادا کریں، ہمیں جمہوریت کا دفاع کرنا ہے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے مقامی میڈیا کو انٹرویو دیتے ہوئے کیا، جرمن وزیر خارجہ کا کہنا تھا جمہوریت کی دفاع کے لیے ہم سب کو کھڑا ہونا ہے، ملک میں نسل پرستی جیسے واقعات سے عالمی سطح پر جرمنی کی ساخت کو خطرات لاحق ہیں۔

انہوں نے کہا کہ آج جرمنی آزاد ہے، ملک میں قانون کا بول بالا ہے لہذا اس جموری نظام کو بچانے کے لیے تمام شہریوں کو اپنا کردار ادا کرنا ہوگا۔

اقلیتوں کا تحفظ یقینی نہ بنایا گیا تو جمہوریت خطرے میں پڑسکتی ہے: جرمن چانسلر

ہائیکو ماس کا کہنا تھا کہ ہمیں مذہب اور نسل پرستی کے خلاف اٹھ کھڑا ہونا ہے۔خیال رہے کہ گذشتہ دنوں نسل پرستی کے خلاف جرمنی میں مظاہرے بھی ہوئے تھے۔

قبل ازیں گذشتہ ہفتے جرمن چانسلر انجیلا مرکل نے اپنے ایک انٹرویو میں کہا تھا کہ جمہوریت صرف اکثریت کا نام نہیں بلکہ اقلیتوں کا تحفظ یقینی بنانا بھی جمہویت کی ذمہ داری ہے، بصورت دیگر جمہریت خطرے میں پڑسکتی ہے۔

انہوں نے یہ بھی کہا تھا کہ جمہوریت اقلیتوں کے تحفظ، آزادی اظہار کو یقینی بنانے اور عدلیہ کی آزادی کا نام ہے، اداروں کا تحفظ یقینی بنانے کی ضرورت ہے، اگر اس حوالے سے اقدامات نہیں کیے جاتے تو جمہوریت نامکمل رہ جائے گی، ہمیں جمہوری اقدار کو مزید مضبوط کرنے کی بھی ضرورت ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں