The news is by your side.

Advertisement

عمران فاروق قتل کیس، عشرت العباد کو شامل تفتیش کرنے کا فیصلہ

کراچی: ایم کیو ایم کے رہنما عمران فاروق قتل کیس میں سابق گورنر سندھ عشرت العباد کو شامل تفتیش کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق ایم کیو ایم کے رہنما عمران فاروق قتل کیس میں برطانوی شواہد سامنے آنے کے بعد سابق گورنر سندھ ڈاکٹر عشرت العباد کو شامل تفتیش کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

ایف آئی اے ذرائع کا کہنا ہے کہ اس سلسلے میں ایف آئی اے کاؤنٹر ٹیررازم ونگ کی ٹیم وزارت داخلہ کی اجازت کے بعد عشرت العباد سے پوچھ گچھ کے لیے دبئی جاسکتی ہے۔

واضح رہے کہ اسکاٹ لینڈ یارڈ نے چار روز قبل عمران فاروق کیس کے تمام شواہد پاکستان کے حوالے کیے تھے، اسکاٹ لینڈ یارڈ کی رضامندی سے مقدمہ پاکستان میں چلانے پر اتفاق کیا گیا ہے۔

مزید پڑھیں: سانحہ بلدیہ کیس، فیکٹری مالک کے سنسنی خیز انکشافات

عمران فاروق کے قتل کی سازش میں ملوث تمام نام شواہد میں شامل ہیں، عشرت العباد کا سانحہ بلدیہ ٹاؤن کیس میں بھی بالواسطہ نام لیا گیا تھا۔

یاد رہے کہ عمران فاروق کو 16 ستمبر 2010 کو نارتھ لندن میں ان کی رہائش گاہ کے باہر قتل کردیا گیا تھا۔

خیال رہے کہ چند روز قبل سانحہ بلدیہ فیکٹری کیس میں فیکٹری مالک نے سنسنی خیز انکشافات کیے تھے۔

فیکٹری مالک ارشد بھائیلہ کا کہنا تھا کہ فیکٹری ملازم منصور نے ایم کیو ایم سے معاملات طے کرائے تھے، 2012 میں حماد صدیقی نے 25 کروڑ روپے کا مطالبہ کیا، ملزم رحمان بھولا نے دھمکی دی 25 کروڑ دو یا پارٹنر شپ کرو۔

فیکٹری مالک کا کہنا تھا کہ سانحے کے بعد عشرت العباد نے احمد چنائے سے پیغام بھجوایا، فی کس چار لاکھ روپے ایم کیو ایم کے پلیٹ فارم پر جمع کرائیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں