The news is by your side.

Advertisement

برلن کی مسجد پر چھاپہ، پولیس نے اہم دستاویزات قبضے میں لے لیں

برلن : داعش کی مالی معاونت کرنے کے شبے میں جرمنی کے دارالحکومت میں واقع الصحابہ مسجد پر پولیس نے چھاپہ مارکارروائی میں اہم دستاویزات قبضے میں لے لیں۔

تفصیلات کے مطابق جرمنی کے دارالحکومت برلن کے ویڈنگ نامی علاقے میں واقع ایک مسجد پر پولیس نے چھاپہ مار کارروائی کے دوران اہم دستاویزات قبضے میں لے لی، پولیس کو شبہ تھا کہ مذکورہ مسجد میں دہشت گرد تنظیم داعش کے لیے چندہ جمع کیا جاتا ہے۔

مقامی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ سرکاری پراسیکیوٹر نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر پیغام دیا کہ حکام کو شبہ تھا کہ مذکورہ مسجد میں 45 سالہ احمد نامی شخص جسے امام ابو البراء کہا جاتا ہے داعش کےلے فنڈز جمع کرتا ہے۔

جرمن حکام کا کہنا ہے کہ احمد کی جانب سے داعش کی مالی معاونت کا مقصد ’دہشت گردانہ کارروائیوں کےلیے اسلحہ دیگر ساز و سامان‘ کی خریداری تھا۔

جرمن خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ پولیس کو جس احمد نامی شخص کی تلاش تھی وہ اسی مسجد کا خطیب تھا جس پر پولیس نے چھاپہ مار کارروائی کی تھی۔

مقامی خبر رساں ادارے کے مطابق پولیس نے چھاپہ مار کارروائی کے دوران کسی کو گرفتار نہیں کیا اور نہ ہی مسجد کو بند کیا۔

خبر ایجنسی کے مطابق اصحابہ نامی مسجد پر دو روز قبل صبح سویرے چھاپہ مارا گیا تھا، پولیس مبینہ شخص مکمل نام ذاتی کوائف کے تحفظ سے متعلق جرمن قانون کے باعث ظاہر نہیں کیا۔

مزید پڑھیں : سوئٹزرلینڈ میں امام مسجد سمیت 4 افراد گرفتار

یاد رہے کہ ایک سال قبل یورپی ملک سوئٹزرلینڈ کی پولیس نے ایک مسجد پر چھاپہ مار کارروائی کے دوران داعش میں شمولت اختیار کرنے کے لیے ذہن سازی اور مالی معاونت کے الزام میں امام مسجد سمیت 4 مشتبہ افراد کو گرفتار کیا تھا۔

مذکورہ کارروائی داعش کا حصہ بننے والے چند نوجوانوں کی گرفتاری کے بعد ہونے والی تحقیقات کے نتیجے میں عمل میں لائی گئی تھی۔

واضح رہے دنیا بھر میں بڑھتے ہوئے دہشت گردی کے واقعات اور شدت پسندی میں اضافے کے باعث بین الاقوامی سطح پر مذہبی رجحان رکھنے والے افراد اور عبادت گاہوں کی سخت نگرانی کا عمل جا ری ہے،سوئٹزر لینڈ میں ہونے والی کارروائی بھی اسی تناظر میں عمل میں لائی گئی ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں