The news is by your side.

Advertisement

جرمنی: حکومت نے پولیس اختیارات میں اضافے کا مسودہ تیار کرلیا

برلن : حکومت نے پولیس اختیارات میں اضافے کے لیے تیار کیے گئے مسودے کے تحت شہریوں کے واٹس ایپ کی نگرانی اور پولیس کی کارروائیوں میں اضافے کی تجویز بھی پیش کی گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق یورپی یونین کے رکن ملک جرمنی کے صوبے نارتھ رائن ویسٹ فیلیا کی حکومت نے سیکیورٹی معاملات مزید سخت کرنے کے لیے اقدامات کرنے کی منصوبہ بندی کرلی، جس کے بعد وقتی طور پر مفلوج کرنے والی گن کا استعمال، سماجی رابطوں کی ویب سایٹس کی نگرانی اور سیکیورٹی اداروں کی کارروائیوں میں بھی اضافہ ہوگا۔

جرمنی کے صوبے نارتھ رائن ویسٹ فیلیا کی حکومت کی جانب سے سیکیورٹی معاملات سخت کرنے پر عوام کو شدید خدشات لاحق ہیں، شہریوں کا خیال ہے کہ عام لوگوں بالخصوص نسلی بنیادوں پر شہریوں کی نگرانی میں اضافہ ہوگا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ صوبائی حکومت کی جانب سے پولیس قونین کے حوالے سے مجوزہ مسودہ منظر عام پر آنے کے بعد سے شہریوں کی جانب سے حکومت کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا جارہا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ نئے مسودے کے تحت محکمہ پولیس کو حد سے زیادہ اختیارات دیئے جارہے ہیں۔

خیال رہے کہ مذکورہ صوبے پر موجودہ حکومت سے قبل حکمرانی کرنے والی جماعت کو شہریوں کی سلامتی کے حوالے سے ناقص انتظامات کرنے پر شدید تنقید کا نشانہ بنایا گیا تھا، جس کے باعث حالیہ انتخابات میں سوشل ڈیموکریٹک پارٹی کو ویسٹ فیلیا میں شکست سے دوچار ہونا پڑا تھا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے مطابق پولیس کو تفویض کیے جانے والے اختیارات کے مسودے میں تجویز دی گئی ہے کہ ویڈیوز اور واٹس ایپ کی نگرانی میں اضافہ کیا جائے اور پولیس کو جس کسی پر بھی شک ہو اسے 28 روز تک روک کر تلاشی لے سکتی ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں