دبئی میں سونے کی قیمتوں میں کمی، ریکارڈ فروخت -
The news is by your side.

Advertisement

دبئی میں سونے کی قیمتوں میں کمی، ریکارڈ فروخت

دبئی: متحدہ عرب امارات میں ایک بار پھر سونے کی خریداری اپنے عروج پر جارہی ہے، خریداروں کا ماننا ہے کہ اس وقت قیمتیں اتنی کم ہیں کہ یہ سرمایہ کاری کے لیے بہترین وقت ہے۔

تفصیلات کے مطابق گزشتہ جمعے دبئی کی مقامی صرافہ منڈی میں رواں سال کی سب سے زیادہ سونے کی خریداری ریکارڈ کی گئی،، لگ بھگ چھ سو سے سات سو کلو سونے کی فروخت دیکھنے میں آئی۔

مارکیٹ ذرائع کا کہنا ہے کہ یہ تمام تر خرید وفروخت دبئی کے سرکاری نرخ یعنی کے 133.75 درہم فی گرام ( 22 قیرات) کی گئی ہے اور خریداروں کا مقصد سرمایہ کاری کرنا ہے۔

بتایا جارہا ہے کہ ریکارڈ خریداری کے گلے دن یعنی 18 اگست کو بھی منڈی میں تیزی رہی جس کے سبب سونے کے ریٹیلرز نے سکھ کا سانس لیا، جنہوں نے رواں سال کافی مندی کا سامنا کیا ہے۔ دیکھنے میں آیا تھا کہ رواں سال روزانہ کی بنیاد پر 150 سے 200 کلوگرام سونے کا کاروبار ہورہا تھا کہ جو کہ سن 2014-15 کی نسبت انتہائی کم تھا ، جب 300 سے 400 کلو گرام کا کاروبار ہوتا تھا۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ رواں سال 17 اگست سے پہلے 29 جون وہ واحد دن تھا جب کل 600 کلو گرام سے زیادہ سونے کا کاروبار ہوا تھا اور اس کی وجہ یہ تھی کہ فی گرام سونے کی قیمت 150 درہم سے گر کر 142 درہم پر آگئی تھی۔

گزشتہ ویک اینڈ پر سونے کی خریداری کرنے والوں میں سے زیادہ تر کاماننا ہے کہ سونے کی قیمتیں اپنی انتہائی کم حد تک آچکی ہیں اور یہ سرمایہ کاری کرنے کے لیے انتہائی اچھا موقع ہے۔ 4/8 گرام کے سونے کے سکے اور 10/20 گرام کی بار خریداروں کی توجہ کا مرکز بنی رہی۔

دوسری جانب زیورات خریدنے والے گاہکوں نے مشین سے بنے ہوئے زیورات خریدنے پر ترجیح دی جس کا سبب ان کی پیداواری لاگت کا انتہائی کم ہونا ہے، دوسری جانب ہیرے اور ڈیزائنر جیولری کی جانب عوام کا رحجان کم ہی رہا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں