The news is by your side.

Advertisement

حکومت کا فیصلہ ، آزادی مارچ سے قبل فضل الرحمان کو بڑا دھچکا

حکومت کا جمعیت علمائے اسلام ف کی ذیلی تنظیم انصارالاسلام کو کالعدم قرار دینے کا فیصلہ

اسلام آباد : حکومت نے جمعیت علمائے اسلام ف کی ذیلی تنظیم انصارالاسلام کو کالعدم قرار دینے کا فیصلہ کرلیا ہے ، سمری میں کہا گیا ہے کہ جے یوآئی کی ذیلی تنظیم لٹھ بردار ہے ، قانون اس کی اجازت نہیں دیتا۔

تفصیلات کے مطابق حکومت نے جمعیت علمائے اسلام ف کی ذیلی تنظیم کو کالعدم قرار دینے کا فیصلہ کیا ہے ، انصار الاسلام کو کالعدم قرار دینے کی سمری وزارت قانون اور الیکشن کمیشن کو ارسال کردی گئی ہے ، سمری وزارت داخلہ کی جانب سےبھجوائی گئی۔

سمری میں کہا گیا ہے کہ جے یوآئی کی ذیلی تنظیم لٹھ بردارہے اور قانون اس کی اجازت نہیں دیتا، ذیلی تنظیم پارٹی منشور کی شق نمبر26 کے تحت الیکشن کمیشن میں رجسٹرڈ ہے۔

یاد رہے چند روز قبل جمعیت علمائے اسلام ف کی ذیلی تنظیم کی ایک ویڈیو وائرل ہوئی تھی، جس میں دیکھا گیا تھا کہ مولانا فضل الرحمان محافظ دستے سے سلامی لے رہے ہیں۔

بعد ازاں خیبر پختونخوا حکومت نے جے یو آئی ف کے محافظ دستے کے خلاف کارروائی کا اعلان بھی کیا تھا۔

مزید پڑھیں : آزادی مارچ : اپوزیشن جماعتوں سے مذاکرات کیلئے سینئر ارکان پر مشتمل کمیٹی تشکیل

یاد رہے اپوزیشن جماعتوں کے حکومت مخالف احتجاجی مارچ کے لیے وزیراعظم کی ہدایت پر پرویزخٹک کی قیادت میں سینئر ارکان پر مشتمل کمیٹی تشکیل دے دی گئی ہے، جس میں 7 ارکان شامل ہیں۔

کمیٹی سیاسی انتشار سے بچنے کیلئے اپوزیشن سے مذاکرات کرے گی، کمیٹی کو مذاکرات کا مکمل اختیار دے دیا گیا ہے ۔

اس سے قبل یاد رہے وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت کورکمیٹی اجلاس میں مولانا فضل الرحمان سے مذاکرات کیلئے کمیٹی بنانے کا فیصلہ کرتے ہوئے پرویز خٹک کو کمیٹی کا سربراہ مقرر کردیا تھا۔

واضح رہے جے یو آئی (ف) نے 27 اکتوبر کو اسلام آباد کی طرف مارچ کا اعلان کیا ہے، مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ مظاہروں کے ساتھ اسلام آباد کی طرف آزادی مارچ شروع ہوگا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں