The news is by your side.

Advertisement

حقانی خاندان کو بلیک لِسٹ کرنے پر طالبان کا ردِ عمل

کابل: طالبان نے امریکا پر دوحہ معاہدے کی خلاف ورزی کا الزام لگاتے ہوئے کہا ہے کہ حقانی خاندان کو بلیک لِسٹ کرنا معاہدے کی خلاف ورزی ہے۔

تفصیلات کے مطابق افغان طالبان نے کہا ہے کہ امریکا کا حقانی خاندان کے افراد کو بلیک لسٹ کرنا دوحہ معاہدے کی خلاف ورزی ہے، حقانی خاندان کو ابھی تک ٹارگٹ کیا جا رہا ہے، جب کہ وہ اسلامی امارات کا حصہ ہے، حقانی خاندان کی کوئی علیحدہ شناخت یا تنظیم نہیں ہے۔

واضح رہے کہ دوحہ معاہدے میں طالبان رہنماؤں کے نام بلیک لسٹ سے نکالنے کا مطالبہ کیا گیا تھا، اس معاہدے پر فریقین نے 2020 میں دستخط کیے تھے۔

سراج الدین حقانی کو نئی طالبان حکومت میں وزیر داخلہ کا منصب دیا گیا ہے، وہ حقانی نیٹ ورک کا حصہ رہے ہیں، ان پر افغانستان میں 20 سالہ جنگ کے دوران امریکی افواج پر حملوں کا الزام ہے، امریکا نے ان کے سر پر 5 ملین ڈالرز کا انعام بھی رکھا تھا اور وہ امریکی ٹیرر لسٹ میں شامل کیے گئے تھے۔

طالبان نے کابل ایئرپورٹ کا نام تبدیل کر دیا

نئی حکومت کے وزیر اعظم ملا محمد حسن اخوند سمیت گروپ کے دیگر کئی ارکان بھی عالمی سطح پر بلیک لسٹڈ ہیں۔

خیال رہے کہ آج کابل میں حامد کرزئی ایئر پورٹ کا نام تبدیل کر دیا گیا ہے، حامد کرزئی ایئر پورٹ کا نام کابل انٹرنیشنل ایئر پورٹ کر دیا گیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں