The news is by your side.

کیا روزانہ نہانا صحت کے لیے نقصان دہ ہوسکتا ہے؟

نہانا صاف ستھرا رہنے کا ایک نہایت مؤثر اور اہم طریقہ ہے اس سے جسم کی تمام گرد اور میل صاف ہوجاتی ہے، اور انسان ایک طرح کی راحت محسوس کرتا ہے۔

کچھ افراد ایسے بھی ہیں جو روزانہ اور کچھ دن میں کئی بار نہاتے ہیں، ہر انسان کو ہفتے میں کتنی بار نہانا چاہیئے، اس حوالے سے ماہرین کی مختلف آرا ہیں۔

ییل اسکول آف میڈیسن کے ماہر امراض جلد اور اسسٹنٹ پروفیسر جیفری کوہن کا کہنا ہے کہ ہر شخص اپنی ذاتی ترجیحات کو مد نظر رکھتے ہوئے صفائی کا اہتمام کرتا ہے، کچھ لوگ عام طور پر ہر دوسرے دن اور کچھ دن میں دو بار نہاتے ہیں۔ اگر آپ کا تعلق ایسے افراد سے ہے تو یہ مناسب تعداد ہے۔

کوہن ساتھ ہی یہ مشورہ دیتے ہیں کہ نہانے کے لیے نیم گرم پانی کا استعمال کریں اور نہانے کا یہ عمل 10 سے 15 منٹ میں مکمل ہوجانا چاہیئے، ایسا کرنے سے آپ کی جلد دیر تک گرم پانی کا سامنا کرنے سے محفوظ رہے گی جو کہ جلد کی خشکی کا سبب بن سکتا ہے۔

واضح رہے کہ جلد ہمارے مدافعتی نظام کو برقرار رکھنے میں کردار ادا کرتی ہے اور انفیکشن سے لڑنے میں مدد کے لیے اینٹی مائیکرو بائیل پیپٹائیڈز پیدا کرتی ہے۔

کوہن کا کہنا ہے کہ جب آپ زیادہ شاور لیتے ہیں تو اس کے نتیجے میں یہ سب دھل جاتا ہے، جبکہ بہت زیادہ نہانا آپ کے بالوں کوبھی متاثر کر سکتا ہے جس سے بالوں کی جڑیں کمزور ہوکر ان کے جھڑنے کا سبب بن سکتی ہے۔

لہٰذا جلد کو خشک ہونے سے بچانے کے لیے نیم گرم پانی کا استعمال کیا جائے، گرم پانی صرف جلد کو خشک کرتا ہے لیکن اس کی نمی کو برقرار رکھتا ہے۔

کوہن کا کہنا ہے کہ، آپ صفائی کے لیے کیمیکل سے پاک نرم صابن کا بھی استعمال کر سکتے ہیں، اور مکمل طور پر خشک ہونے سے پہلے جلد پر موئسچرائزر کا استعمال کریں تاکہ نمی کو محفوظ کیا جاسکے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں